مہاراشٹر کے گورنرکوشیاری کوفوری طورپر ہٹایاجائے: اشوک چوہان

221

ناندیڑ:22نومبر ( ورقِ تازہ نیوز) مہاراشٹر کے سابق وزیر اعلیٰ اشوک راو  چوہان نے مطالبہ کیا ہے کہ چھترپتی شیواجی مہاراج کے بارے میں متنازعہ بیان دینے والے گورنر بھگت سنگھ کوشیاری کو فوری طور پر عہدے سے ہٹایا جائے اور مہاراشٹر میں نیا گورنر مقرر کیا جائے۔ناندیڑ شہر اور ضلع کانگریس کمیٹی کی جانب سے آج منگل (22)نومبر کو صبح 11 بجے آئی ٹی آئی کارنر کے علاقے میں مہاتما جیوتی با پھولے اور کرانتی جیوتی ساوتری بائی پھولے کی یادگاری کے احاطہ میں مہاراشٹرکے گورنر بھگت سنگھ کوشیاری اوربی جے پی لیڈر سدھانشو ترویدی کی جانب سے مہاراشٹر کے مہاراجہ چھترپتی شیواجی مہاراج کے بارے میں توہین آمیز الفاظ استعمال کرنے اورمہاراشٹر کی بیٹی شردھا واکر کو قتل کرنے والے درندہ صفت ملزم کو سزائے موت دلوانے کے لیے احتجاجی مظاہرے کیے گئے۔

ا س موقع پر سابقہ وزیراعلیٰ اشوک چوہان مظاہرہ سے خطا ب کررہے تھے۔مظاہرہ میں مہاراشٹر پردیش کانگریس کمیٹی کے نائب صدر اور قانون ساز کونسل میں کانگریس کے گروپ لیڈر امرناتھ راجورکر، سابق وزیر ڈی۔ پی۔ ساونت ،موہن ہمبرڈڈے سابق ایم ایل اے اوم پرکاش پوکرنا، سریندر گھوڈجکر، کانگریس ضلع صدر گاویندراو¿ شندے ناگیلیکر، سابق میئر بلونت سنگھ گاڑی والے، سابق میئر جے شری پاوڑے، دلیپ پاٹل بیتموگریکر، میونسپل اسٹینڈنگ کمیٹی کے سابق چیئرمین کشور سوامی، وریندر سنگھ گاڑی والے ‘ انوجا تہرا، شمیم وجے یونکر، شام درک موجودتھے۔ اس موقع پر مزید بات کرتے ہوئے سابق وزیر اعلیٰ اشوک راو ¿ چوہان نے کہا کہ آئینی اور اعلیٰ عہدوں کو اپنے عہدے کی ساکھ کو برقرار رکھنا چاہیے لیکن گورنر بھگت سنگھ کوشیاری نے بار بار غلط بیانات دے کر گورنر کے عہدے کی ساکھ کو داغدار کیا ہے۔

چھترپتی شیواجی مہاراج نہ صرف ریاست کے بلکہ ملک کے بھی بھگوان ہیں۔ان کے اس بیان سے ملک کی شناخت کو دھچکا لگا۔ انھوں نے مطالبہ کیا ہے کہ مرکزی حکومت ان کے جذبات کا احترام کرتے ہوئے مہاراشٹر میں نئے گورنرکی تعیناتی کرے ۔اس کے ساتھ ہی خواتین کے انصاف اور تحفظ کا مسئلہ اٹھاتے ہوئے انہوں نے دہلی میں شردھا واکر قتل کیس کے ملزم آفتاب امین پونا والا پر مقدمہ کو فاسٹ ٹریک کورٹ چلانے اور پھانسی دےنے کامطالبہ کیا۔

اس وقت امرناتھ راجورکر، سابق وزیر ڈی۔ پی۔ ساونت نے گورنر کے متنازعہ بیان کی سخت مذمت کی۔ اس وقت کانگریس کے مشتعل مظاہرین نے گورنر کے خلاف نعرے لگائے اور گورنر کی تصویر پر تھپڑ مار کر احتجاج کیا۔اس مظاہرے میں نیلیش پاوڑے، سنجے لہانکر، منگیش کدم، بالاجی گوانے، بالاجی پنڈگالے، رنگناتھ بھجبل، اننت ٹپڈالے، آنندراو¿ بھنڈارے، کشور سوامی، ونود کنچن گیرے ، سری نواس مورے، ولاس دھبالے، کشور بھورے، عبدالغفارکے علاوہ تمام عہدیداران ‘کارپوریٹرس سمیت کانگریس کے کارکنان کی بڑی تعداد موجود تھے۔