!-- Auto Size ads-1 -->

اورنگ آبادناندیڑ:5مئی (ورق تازہ نیوز)مراٹھواڑہ کی نامور شخصیت خالد سیف الدین کو مہاراشٹر میںاقلیتی سماج کےلئے تعلیمی پالیسی تیار کرنے کے لئے قائم کردہ اسٹڈی گروپ کی ممبرشپ کےلئے نامزد کیا گیا ہے۔ اس اسٹڈی گروپ میں محترمہ فوزیہ خان‘رکن راجیہ سبھا وبانی فیڈریشن آف آل مائناریٹی ایجوکیشنل آرگنائزیشن (فیم) پربھنی ] ڈاکٹرانیس احمد ‘ محمودہ تعلیمی سوسائٹی ناگپور کوبحیثیت رکن شامل کیاگیا ہے۔مورخہ17 نومبر2021 کو حکومت کے فیصلے کے مطابق ریاست کے ایجوکشن کمشنر کی صدارت میںاسٹڈی گروپ قائم کیاگیا ہے ۔ اور مذکورہ تینوں شخصیات اس گروپ کے رکن نامزد کئے گئے ہیں۔

خالد سیف الدین فیڈریشن آف آل مائناریٹی ایجوکیشنل آرگنائزیشن فیم کے جنرل سیکریٹری کی حیثیت سے نہ صرف مراٹھواڑہ بلکہ ریاست کے دیگر علاقوں میںبھی تعلیمی سرگرمیاں انجام دے رہے ہیں ۔ وہ اردو زبان وادب کے بے لو ث خادم ہیں۔انھوں نے واٹس ایپ گروپ” وارثان حرف و قلم“ کے عنوان سے ایک فعال ادبی گروپ بھی قائم کیا ہے جس کے سینکڑوں ممبران ہیں ان کی رہنمائی مےں اردو زبان اور ادب کی کئی کتابوں کااجراء عمل میں آچکا ہے۔خالد سیف الدین کی تعلیمی‘ادبی اور اردو زبان کی خدمات کومدنظر رکھ کر حکومت مہاراشٹرنے انھیں اسٹڈی گروپ کارکن نامزد کیا ہے ۔ یہ اسٹڈی گروپ ریاست مہاراشٹر کے اقلیتی سماج کی تعلیمی ترقی کے لئے علاحدہ سے پالیسی وضع کرکے حکومت کو اپنی رپورٹ صادر کرے گا۔ورق ِ تازہ‘ ناندیڑ کے مدیراعلیٰ محمدتقی اور ادارہ کے اسٹاف ممبران نے خالد سیف الدین کو دلی مبارکباد پیش کرتے ہوئے اس توقع کااظہار کیا ہےکہ وہ اقلیتوںن کےلئے علاحدہ تعلیمی پالیسی وضع کرنے کلیدی رول انجام دیں گے۔