مہاراشٹر میں ہجوم کا نوپور شرما کی حمایت میں پوسٹ ڈالنے والے شخص پر تلواروں اور لاٹھیوں سے حملہ : 4 ملزمین گرفتار

1,736

احمد نگر : (ورق تازہ نیوز) مہاراشٹر کے احمد نگر ضلع میں ایک 23 سالہ شخص پر ہجوم نے تیز دھار دار ہتھیاروں سے حملہ کیا جس پر سوشل میڈیا پر بھارتیہ جنتا پارٹی کی معطل ترجمان نوپور شرما کی حمایت کرنے کا الزام ہے، جس سے وہ شدید زخمی ہو گیا، پولیس نے ہفتہ، 6 اگست کو اسطرح کی معلومات دی۔ 4 اگست کو پیش آنے والے واقعے کے سلسلے میں چار اہم ملزمان کو گرفتار کیا گیا ہے۔ ایک سینئر افسر نے کہا کہ حملے کے پیچھے محرکات کے بارے میں کچھ کہنا قبل از وقت ہے کیونکہ تفتیش ابتدائی مرحلے میں ہے۔

ایک پولیس اہلکار نے بتایا کہ اس شخص کی شناخت پرتیک عرف سنی راجیندر پوار کے طور پر کی گئی ہے، اسے سر اور جسم کے دیگر حصوں پر زخموں کی وجہ سے ہسپتال کے انتہائی نگہداشت یونٹ (ICU) میں داخل کرایا گیا تھا۔

احمد نگر ضلع ہیڈکوارٹر سے 222 کلومیٹر دور کرجت قصبے کے اکابائی چوک میں ایک میڈیکل شاپ کے سامنے جمعرات کی شام کو مسلم کمیونٹی کے کم از کم 14 لوگوں نے پوار پر تلوار، درانتی، لاٹھیوں اور ہاکی اسٹکوں سے حملہ کیا۔

یہ کیسے ہوا

اہلکار نے بتایا کہ یہ واقعہ اس وقت پیش آیا جب کیس میں شکایت کنندہ پوار اور امیت مانے اپنے دو پہیہ گاڑی پر ایک تقریب میں شرکت کے لیے جا رہے تھے اور میڈیکل شاپ کے قریب ایک دوست کا انتظار کر رہے تھے۔جب وہ ایک دوست کا انتظار کر رہے تھے، مسلم کمیونٹی سے تعلق رکھنے والے کچھ لوگ دو پہیوں پر ان کے پاس پہنچے۔ فرسٹ انفارمیشن رپورٹ (ایف آئی آر) کے مطابق ان کے پاس تلوار، درانتی اور ہاکی سٹکس تھے۔

مانے نے جمعہ کو درج اپنی شکایت میں کہا ہجوم میں سے ایک نے پوار پر چیختے ہوئے کہا کہ اس نے نوپور شرما کی حمایت میں سوشل میڈیا پر ایک پوسٹ لکھی ہے اور کنہیا لال کے قتل کے بعد انسٹاگرام پر اسٹیٹس بھی ڈالا ہے، اور ان پر حملہ کیا، ۔

واضح ہو کہ گزشتہ دنوں کنہیا لال کو ادے پور میں دو مسلم نوجوانوں نے مبینہ طور پر بی جے پی کی سابق ترجمان نوپور شرما کی حمایت میں ایک سوشل میڈیا پوسٹ شیئر کرنے پر مبینہ طور پر قتل کر دیا تھا

حملہ آوروں نے پوار کو بھی دھمکی دی کہ ان کا بھی وہی انجام ہوگا جو امیش کولہے کا ہوا تھا۔ اہلکار نے ایف آئی آر کے حوالے سے بتایا کہ حملہ آوروں میں سے ایک نے پوار کی آنکھ پر شدید وار کیا۔