مہاراشٹر : سوئفٹ کار کا ٹائر پھٹنے سے خوفناک حادثہ؛ کالج کے 6 طلباء جاں بحق

966
  • یہ کار موہدری گھاٹ پر ٹائر پھٹنے کے بعد دو دیگر گاڑیوں سے ٹکرا گئی۔ ڈیوائیڈر کو عبور کرنے کے بعد کار سڑک کے مخالف سمت سے جا رہی دو دیگر گاڑیوں سے ٹکرا گئی۔

ناسک: ناسک-پونے ہائی وے پر حادثات کا موسم جاری ہے اور آج ایک بار پھر سنار کے قریب موہدری گھاٹ پر خوفناک حادثہ پیش آیا ہے۔ اس حادثے میں پانچ افراد کی موقع پر ہی موت ہو گئی، جب کہ آٹھ افراد شدید زخمی ہو گئے۔ زخمی مسافروں کو ناسک کے ایک پرائیویٹ اسپتال میں داخل کرایا گیا ہے۔ مرنے والوں میں تین نوجوان خواتین اور دو نوجوان شامل ہیں۔

موصولہ اطلاع کے مطابق ناسک کے گنگاپور روڈ سے کالج کے طلباء کا ایک گروپ گاؤں نکلا ہوا تھا۔ لیکن موہدری گھاٹ پر ان کی گاڑی کا ٹائر پھٹ گیا اور ان کی کار دو دیگر گاڑیوں سے ٹکرا گئی۔ کار ڈیوائیڈر کو عبور کر کے سڑک کے مخالف سمت سے جا رہی دو دیگر گاڑیوں سے ٹکرا گئی۔

اس حادثے میں گاڑیاں تباہ ہوگئیں۔ حادثے کی اطلاع ملتے ہی پولیس انتظامیہ فوری طور پر موقع پر پہنچ گئی اور امدادی کام جاری ہے

حادثہ موبدری سے ناسک پولیس سے موصولہ ابتدائی معلومات کے مطابق گھاٹ میں گنپتی مندر کے قریب پیش آیا۔ سوئفٹ ڈیزائر کار سنگمنیر آرہی تھی۔ تاہم اس کار کا ٹائر اچانک پھٹ گیا۔ اس وقت کار کی رفتار تیز تھی۔ جس کی وجہ سے یہ گاڑی بے قابو ہوگئی اور سیدھی مخالف سڑک پر جاگری اس وقت یہ کار سامنے سے آنے والی کچھ گاڑیوں سے ٹکرا گئی اور انووا کار سمیت کچھ کاروں کو زوردار ٹکر ماری گئی۔ اس حادثے میں سوئفٹ کار میں سوار 5 افراد ہلاک ہو گئے ہیں۔ اس میں دو نوجوان مرد اور تین نوجوان خواتین شامل ہیں۔ پانچوں کے ٹی ایچ ایم کالج کے طالب علم بتائے جاتے ہیں۔ ساتھ ہی یہ تمام طلبہ ناسک شہر کے سڈکو علاقہ کے رہنے والے بتائے جاتے ہیں۔ یہ سب شادی کے لیے گئے ہوئے تھے۔

حادثہ اتنا شدید تھا کہ کچھ ہی دیر میں زور دار آواز آئی اور کاریں آپس میں ٹکرا گئیں۔ حادثہ ہوتے ہی ہائی وے پر ٹریفک جام ہو گئی۔ کچھ لوگوں نے فوراً پولیس کو اطلاع دی۔ جس کے بعد پولیس کی ٹیم موقع پر پہنچ گئی۔ زخمیوں کو فوری طور پر سند کے اسپتال داخل کرایا جا رہا ہے۔ اس حادثے میں گاڑیوں کو نقصان پہنچا ہے. پولیس ٹریفک کی بحالی کے لیے بھرپور کوششیں کر رہی ہے۔ لاش کو پوسٹ مارٹم کے لیے لے جایا جا رہا ہے۔ انووا کار میں سوار مسافر زخمی ہو گئے۔

مرنے والے طلباء میں بریش بوڈ کے میوری ،پائل شبھم تانگے دیگر دو متوفی کی شناخت ابھی باقی ہے) شامل ہیں۔ جبکہ گایتری پھڑ ساکشی ،گھلا، ساحل ،ورکے سنیل دتاترے دلوی اور کچھ دیگر زخمی ہیں۔ ادھر بعض زخمیوں کی حالت تشویشناک بتائی جاتی ہے۔ جس سے مرنے والوں کی تعداد میں اضافے کے آثار ہیں۔