مہاراشٹر حکومت کابیرون ریاست سے آئے 7 /ہزارافراد کیلئے 262 /ریلیف کیمپ

ممبئی:30/مارچ (یو این آئی) مہاراشٹر کے وزیر اعلی ادھو ٹھاکرے نے آج اعلان کیا ہے کہ ریاستی حکومت بیرون ریاست سے آئے مزدور طبقہ اور ۰۷/ہزار بیرون ریاست کیلئے ۲۶۲/ ریلیف کیمپ بنائے گی جہاں ان بیرون ریاست کے قیام و طعام کا بندوبست کیا جائے گا کیونکہ ریاست میں کرونا وائرس سے ہلاک ہونے والوں کی تعداد میں دن بہ دن اضافہ ہو رہا ہے اور اب تک دس افراد لقمہ اجل ہو چکے ہیں جبکہ متاثرین کی تعداد ۵۱۲/تک پہنچ گئی ہے –

وزیر اعلی نے کہا کہ فی الوقت ریاستی حکومت ۰۷/ہزار سے زائد بیرون ریاست سے آئے اور دیگر افراد کیلئے شیلٹر ہوم چلا رہی ہے جہاں انہیں مفت کھانا دستیاب کرایا جا رہا ہے -واضح رہے کہ گزشتہ دنوں ریاست مہاراشٹر اور بیرون مہاراشٹر سے آئے ایک بڑی تعداد میں مزدوروں نے ریاست اور اپنے اضلاع سے لاک ڈاون کے دوران نکلنے کی کوشش کی تھی جس کے بعد پولیس نے انہیں اپنی تحویل میں لیکر شیلٹر کیمپ میں رکھا تھا –

وزیر اعلی کے سیاسی مشیر کشور تیواری نے کہا کہ ریاست چھوڑ کر جانے والے مزدوروں اور بیرون ریاست کے افراد کو کنٹرول کرنا حکومت کیلئے ایک مشکل امر ہو گیا تھا نیز ان ریلیف کیمپ کے قیام سے توقع کی جاتی ہے کہ ریاست چھوڑ کر جانے والوں کا سلسلہ بند ہو گا اور کرونا وائرس کے پھیلنے پر روک لگائی جا سکے گی -ذرائع نے مزید کہا کہ حکومت ۲۶۲/سے زائد ریلیف کیمپ قائم کرنے کا ارادہ رکھتی ہے اس لئے مختلف اضلاع سے بیرون ریاست کے افراد کا ڈیٹا منگایا گیا ہے -واضح رہے کہ گزشتہ کل وزیر اعلی ادھو اٹھاکرے نے بیرون ریاست سے آئے لوگوں سے اپیل کی تھی کہ مصیبت کی اس گھڑی میں وہ گھبرائیں نہیں بلکہ صبروتحمل کا مظاہرہ کریں اور ریاستی حکومت ان کے قیام اور طعام کا بندوبست کرے گی –
ریاستی حکومت نے غریبوں کیلئے سستا کھانا دس روپیہ کے داموں میں تخفیف کر کے اسے پانچ روپیہ کرنے کا بھی اعلان کیا ہے جس کے تحت ایک لاکھ افراد کو اب پانچ روپیہ میں کھانا دستیاب ہو گا -اسی درمیان لارسن اینڈ ٹوبرو کمپنی کے چیئرمین پی این نائک نے اعلان کیا ہے کہ ان کی کمپنی پانچ سو کروڑ روپیہ ایک لاکھ ساٹھ ہزار یومیہ مزدوروں پر خرچ کر ے گی جس سے ان کی رہائش، قیام و طعام کا بندوبست کیا جا سکے گا -کمپنی نے وزیر اعظم فنڈ میں دیڑھ سو کروڑ روپیہ عطیہ دینے کا بھی اعلان کیا ہے –