اورنگ آباد، 04 دسمبر (یو این آئی) مہاراشٹر میں سرکاری ٹرانسپورٹ کو پوری طرح سے ریاستی حکومت کے ساتھ ضم کرنے کے معاملے پر ہڑتالی مہاراشٹر اسٹیٹ ٹرانسپورٹ کارپوریشن (ایم ایس آر ٹی سی) کے ملازمین اور ریاستی حکومت کے درمیان 38ویں دن بھی تعطل جاری رہا۔ حکام نے ہفتہ کو یہ جانکاری دی۔

ریاستی حکومت نے ملازمین کی تنخواہوں میں اضافے کا اعلان کیا تھا لیکن ہڑتالی ملازمین انضمام کے فیصلے کے خلاف ڈٹے ہوئے ہیں۔اپنے نقطہ نظر کا اعادہ کرتے ہوئے وزیر ٹرانسپورٹ انل پراب نے جمعہ کو کہا کہ ایم ایس آر ٹی سی کو ریاستی حکومت کے ساتھ ضم کرنے کا معاملہ ایک عدالتی معاملہ ہے اور ریاستی حکومت اس پر کوئی فیصلہ نہیں کر سکتی۔

انہوں نے ملازمین پر زور دیا کہ وہ فوری طور پر ہڑتال ختم کرکے کام پر واپس آجائیں۔ تاکہ عام شہریوں کو کسی قسم کی پریشانی کا سامنا نہ کرنا پڑے۔انہوں نے کہا کہ اگر ٹرانسپورٹ ورکرس اپنی ہڑتال ختم نہیں کرتے ہیں تو وہ ان کے خلاف مہاراشٹر بیسک سروسیز مینٹیننس ایکٹ (ایم ای ایس ایم اے) کے تحت کارروائی کرنے پر غور کرنے پر مجبور ہوں گے۔

ورق تازہ نیوز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں  https://t.me/waraquetazaonlineاور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔