• 425
    Shares

ممبئی ۔ 22؍ ستمبر ( پریس ریلیز ) ملک کے معروف و مشہور عالم دین مولانا کلیم صدیقی صاحب جنہیں گذشتہ رات ایک دینی پروگرام میں شرکت کے بعد واپسی پر میرٹھ سے اتر پردیش اے ٹی ایس کے خصوصی دستے نے گرفتار کر لیا تھا اور ان پر غیر قانونی طریقے سے تبدیلی مذہب کرانے ،غیر ممالک سے غیر قانونی فنڈنگ ،ملک گیر سطح پر مذہب اسلام کو بڑھاوہ دینے کی کوشش جیسے کئی سنگین الزامات کے تحت معاملہ درج کیا گیا ہے۔

جمعیۃ علماء مہاراشٹر جو کہ ایک عرصہ سے حضرت مولانا سید محمود اسعد مدنی صاحب ( صدر جمعیۃ علماء ہند ) کی یدایت پر ناجائز مقدمات میں ماخو ذ بے گناہوں اور مظلوں کی نچلی عدالتوں سے لے کر سپریم کورٹ میں پیروی کررہی ہے ۔اس کیس میں بھی جمعیۃعلماء مہا راشٹر کے وکلاء لکھنؤ کی خصوصی عدالت میںحاضر ہوئے جہاں آج مولانا کلیم صدیقی کوپیش کیا گیا ،

جمعیۃ کے وکلاء نے بحث کی جس کے نتیجہ میں لکھنؤ کی خصوصی عدالت نے یوپی اے ٹی ایس کو پھٹکار لگائی اور مولانا کلیم صدیقی کو 14 دن کی عدالتی یحویل میں بھیجے کا حکم جاری کیا ہے ۔اس بات کی اطلاع آج یہاں اس مقدمہ کو قانونی امداد فراہم کرنے والی تنظیم جمعیۃ علماء مہا راشٹر کے صدر مولانا حافظ محمد ندیم صدیقی نے دی ہے ۔

مزید تفصیلات دیتے ہوئے انہوں نے بتایا کہ ملک کے معروف و مشہور عالم دین معتبر شخصیت داعی اسلام مولانا کلیم صدیقی صاحب کو یوپی اے ٹی ایس کے ذریعہ حراست میں لئے جانے کے بعد جمعیۃ علماء مہا راشٹر نے فوری طور پر ہم نے جمعیۃ علماء ہند کے صدر مولانا سید محمود اسعد مدنی صاحب سے رابطہ کرکے مولاناکلیم صدیقی کی بےجا گرفتاری اور اس سے پیدا شدہ صورت حال تبادلہ خیال کیا

اور انکی ہدایت کے مطابق جمعیۃ لیگل سیل کے سکریٹری سینر کریمنل لائر ایڈوکیٹ تہور خان پٹھان سمیت لیگل شعبہ سے تعلق رکھنے والے ملک کے مشہور ماہر قانون داں کی آن لائن میٹنگ طلب کی جس میں فوری طور پر یہ فیصلہ لیا گیا کہ مولانا کلیم صدیقی کو قانونی امداد فراہم کی جائے گی ۔حضرت مولاناکی گرفتاری نہ صرف غیر قانونی ہے بلکہ غیر آئینی بھی ہے اورمولانا پر لگائے گئے الزامات بے بنیاد ہیں سیاسی مفادات کے حصول کے لئے انہیں سازش کے تحت پھنسانے کی کو شش کی گئی ہے اس کے خلاف بھی آواز بلند کی جائے گی ۔

جمعیۃ علماء مہا راشٹر کی لیگل ٹیم برق رفتاری سے لکھنؤ پہونچ کر کاروائی میں لگ گئی ہے۔ جمعیۃ علماء مہا راشٹر کے وکیل مشہور کریمنل لائر ایڈوکیٹ ابو بکر سباق سبحانی نے عدالت کےرو برو یہ واضح کر دیا کہ مولانا کلیم صدیقی کو یوپی اے ٹی ایس کی تحویل میں نہ دیا جائے جس پر عدالت نے مولانا کلیم صدیقی کو فوری طور پر عدالتی تحویل میں بھیجنے کا حکم جار ی کیا ہے۔

یہ کاروائی سینر کریمنل لائر ایڈوکیٹ پٹھان تہور خان کی نگرانی میں دہلی کے مشہور کریمنل لائر ایڈکیٹ ابو بکر سباق اور انکے جونیر ایڈوکیٹ نجم الثاقب خان ، ایڈوکیٹ اکرم خان ، ایڈوکیٹ سا جد خان کر رہے ہیں ۔جمعیۃ علماء مہا راشٹر کے صدر مولانا حافظ محمد ندیم صدیقی صاحب نے مولانا کلیم صدیقی صاحب کی گرفتاری پر رد عمل ظاہر کرتے ہوئے کہا کہ مولانا کلیم صدیقی کی گرفتاری نہ صرف بے حد افسوسناک ہے بلکہ ہندوستان کے آئین کی پامالی کرنےوالی ہے۔ جمعیۃ علماء جو کہ ہمیشہ سے عدلو انصاف کی علم بردار رہی ہے اس کیس میں پوری طاقت سے قانونی امداد فراہم کرے گی اور انشاء اللہ مولانا کلیم صدیقی کی بے گناہی ثابت کرکے رہے گی ۔

ورق تازہ نیوز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں  https://t.me/waraquetazaonlineاور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔