منسے کی جانب سےاورنگ زیب کی قبر کو توڑنے کی دھمکی

پولس انتظامیہ نے مقبرے کی حفاظت بڑھادی
ممبئی:۔(محمدیوسف رانا) آل انڈیا مجلس اتحاد المسلمین (اے آئی ایم آئی ایم) کے رہنما اکبر الدین اویسی نے حال ہی میں مہاراشٹر کے اورنگ آباد ضلع میں مغل حکمران اورنگزیب کی قبر پر پھول چڑھائے۔اس معاملے پر مہاراشٹر کی سیاست میں کھلبلی مچ گئی ہے۔ مہاراشٹر نو نرمان سینا کے صدر راج ٹھاکرے نے اورنگ آباد میں اس مقبرے کو منہدم کرنے کا مطالبہ کیا ہے۔ساتھ ہی انہوں نے کہا کہ اگر ایسا نہیں ہوا تو مہاراشٹر نونرمان سینا کے رضاکارخود اسے منہدم کر دیں گے۔

ٹھاکرے کا کہنا ہے کہ اورنگ زیب نے چھترپتی شیواجی مہاراج کے بیٹے چھترپتی سنبھاجی مہاراج کو بے دردی سے قتل کیا۔اسی شخص کی قبر آخر مہاراشٹر حکومت ان کی قبر کو سیکورٹی فراہم کر رہی ہے۔ مہاراشٹر نو نرمان سینا کی وارننگ کے بعد پولیس نے قبر کے اردگردنہ صرف حفاظتی انتظامات کیےبلکہاورنگ آباد ضلع انتظامیہ نے سیاحوں اور دیگر مقامی لوگوں کو بھی قبر پر جانے پر پابندی لگا دی ہے۔ ایم این ایس لیڈر گجانن کالے نے شیو سینا پر تنقید کرتے ہوئے کہا کہ آنجہانی بالا صاحب ٹھاکرے نے کہا تھا کہ اس مقبرے کو گرا دینا چاہیے۔ پھر بھی یہ کیوں موجود ہے؟

کالے نے یہ بھی الزام لگایا کہ اس مقبرے کو سیکورٹی فراہم کرنا ہمارے زخموں پر نمک چھڑکنے کے مترادف ہے۔ یہ بہت بدقسمتی کی بات ہے کہ اورنگ زیب نے سمبھاجی راجے کو بے دردی سے قتل کیا۔ جس نے ہمارے سوراج کو پامال کرنے کی کوشش کی۔ مہاراشٹرکی مہا وکاس حکومت انہیں سیکورٹی فراہم کر رہی ہے۔