ممبرا میں یک روزہ دستاویز کیمپ سے ڈیرھ ہزار لوگوں نے استفادہ کیا

17

تھانے (آفتاب شیخ) ممبرا میں دستاویزات بنانے کا یک روز کیمپ لگایا گیا جس میں ڈیڑھ ہزار کے قریب لوگوں نے اپنی درخواست جمع کرائی ۔ اس کیمپ کی نوعیت کو دیکھتے ہوئے مقامی ایم ایل اے و سابق کابینی وزیر ڈاکٹر جتیندر اوہاڈ نے بھی شرکت کی اور لوگوں سے ملاقات کی ساتھ ہی انھوں نے اس کیمپ کے لگانے والے مقامی سابق کارپوریٹر و اپوزیشن لیڈر اشرف پٹھان (شانو) کے کاموں کی سراہانا بھی کی

انھوں نے کہا کہ اسطرح کا کیمپ میں دیکھتا ہوں کہ شانو کی طرف سے سال میں دو تین مرتبہ لگتا ہے جب کہ ایسے کیمپ ہر ماہ لگیں اور ہر وارڈ میں لگنے چاہیے ۔ اس دوران اشرف پٹھان (شانو) نے بتایا کہ آج سرکاری اسکیمیں ، اسکالر شپ ،وغیرہ کو حاصل کرنے کے لئے سب سے پہلے دستاویزات کا مطالبہ کیا جاتا ہے لیکن ہمارے یہاں خاص کر مسلم حلقوں میں

دستاویزات کی خاصی کمی ہونے کے سبب اقلیتوں کی فلاح و بہبودگی کے لئے آنے والی رقوم لیپس ہوجاتی ہیں اور ہم اسے حاصل نہیں کرپاتے ۔ شانو پٹھان نے بتایا جب کہیں کسی کا کے لئے فارم بھرنے کی بات کہی جاتی ہے تب ہم ڈاکومینٹس بنوانے کے لئے ایجنٹس تلاش کرتے ہیں اور معمولی سے کام کے لئے ہزاروں روپئے خرچ کرتے ہیں اور اس میں بھی

گارنٹی نہیں کہ وہ ڈاکیومنٹس اصلی ہیں یا فرضی میں نے شہریوں کے ان مسائل کو دیکھنے کے بعد سے ہر سال دو تین مرتبہ یہاں امرت نگر درگارہ روڈ پر دستاویزات بنانے کا کیمپ لگانا شروع کیا ہے ۔ اور دیکھ رہا ہوں کہ ہر کیمپ میں ہزار ، دو ہزار ، تین ہزار لوگ اپنا دستاویز بنواتے ہیں ۔ آج جو کیمپ لگایا گیا تھا ا سمیں سینئر سٹیزن ، انکم سر ٹیفکیٹ، رہائشی داخلہ وغیرہ بنایا جارہا تھا۔