• 425
    Shares

ممبرا: مولانا ابوالکلام آزاد اسٹیڈیم کا نام درست معاملہ، جماعت اہلسنت نے قائد نونسل سید علی اشرف کا کیا استقبال
تھانے(آفتاب شیخ)
تھانے سے متصل کثیر مسلم آبادی والے شہر ممبرا کے مولانا ابوالکلام آزاد اسٹیڈیم کا نام کوسہ اسٹیڈیم لکھے جانے پر قائد نونسل، سینئر این سی پی رہنماء سید علی اشرف نے اس پر آواز اٹھائی اسکی شکایات کابینی وزیر جتیندر اوہاڈ اور مونسپل کمشنر سے کی جس پر بہت حد تک ٹی ایم سی کے کاغذات میں یہ نام درست ہوکر آنے لگا ہے ۔ سید علی اشرف کی اس کوشش کی سراہانا کرتے ہوئے آج ’ جماعت اہلسنت‘ ممبرا کی جانب سے ان کا استقبال کرتے ہوئے شال و گلپوشی کی گئی۔ اس موقع پر سید علی اشرف نے کہا کہ میں نے تو صرف کاغذی کاروائی کی تھی جتنا ممکن تھا لیکن مبارکباد کے صحیح حقدار اس شہر کے وہ بیدار شہری ہیں جو ایسی باریک بینی سے کام لیا اور عوامی و سرکاری تساہلی پر نظر رکھے ہوئے ہیں ۔ انھوں نے تمام علمائے کا خیر مقدم بھی کیا اور کہا کہ یہ غلطی عوام کی جانب سے شروع ہوتی ہے اور پھر سرکاری بن جاتی ہے۔ اس لئے جس جگہ کا جوصحیح نام ہے اسے اسی نام سے پکارا جانا چاہیے۔ واضح ہو کہ کوسہ کے عقب میں تعمیر ہوائے اسٹیڈیم کا نام مولانا ابوالکلام آزاد اسٹیڈیم ہے۔ اس نام سے یہاں گیٹ پر تختی بھی لگی ہوئی اس اسٹیدیم کا افتتاح اور اس نام کے تختی کی نقاب کشائی این سی پی کے بانی شردپوار کے ہاتھوں عمل میں آئی تھی ۔ لیکن آہستہ آہستہ اسے شہریوں کی جانب سے مولانا آزاد اسٹیڈیم نہ کہتے ہوئے کوسہ اسٹیڈیم کہا جانے لگا اور یہی جملہ تھانے مونسپل کارپوریشن جس نے اسے تعمیر کیا اس کے دستاویزات میں بھی لکھا جانے لگا جس کو لیکر سوشل میڈیا پر کافی واویلا مچا اس میں سید علی اشرف نے آواز اٹھائی، ٹی ایم سی اور دیگر محکمات کو لیٹر بھیجا اور کسی حد تک اب نام صحیح لکھ کر آنے لگا ہے لیکن اب بھی کہیں کہیں کوسہ اسٹیڈیم لکھا جارہا ہے جس پر سید علی اشرف نے کہا کہ اسے بھی جلد درست کروایا جائے گا۔ اس موقع پر مولانا محفوظ الرحمن علیمی، مولانا جمال احمد، مولانا اسرار، صلاح الدین شیخ، مولانا ارشد مصباحی، مولانا برکت اللہ فیضی، مولانا شوکت علی، صحافی و سماجی کارکن انوارالحق خان ودیگر موجود تھے۔

ورق تازہ نیوز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں  https://t.me/waraquetazaonlineاور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔