ممبئی میں تبلیغی جماعت کی جانچ پڑتال شروع

18

ممبئی ٣١مادچ (یواین آئی) ممبئی دلی کے نظام الدین مرکز کی تبلیغی جماعت میں کرونا وائرس کے شکار شرکاکو قرنطینہ بھیج دیا گیاہےلیکن اس تبلیغی جماعت کے شرکا اور مبلغین نے یہاں کے ممبئی اور نئی ممبئی کا بھی رخ کیا تھا

اوربیرون ملک کی جماعت نے ممبئی شہر و مضافات و نئی ممبئی و نیرول میں بھی جماعت نے قیام و طعام کیا تھا نیرول میں تو فلپائن کی جماعت نے مسجد میں قیام کیاتھا جس کی وجہ سے ایک کی موت ہو گئی اور بقیہ چار مثبت پائے گئے ہیں دلی کی اس تبلیغی جماعت میں قزقستان ۔ فلپائن ۔ ساؤتھ افریقہ سمیت کئی بیرون ممالک کی جماعتیں شریک تھیں ان جماعتوں میں شامل ہونے والے شرکا پر بھی نظر رکھی جارہی ہے کہ اس جماعت میں ملک کےکن کن گوشوں سے شرکا نے شرکت کی تھی ممبئی پولس نے بھی اب ایسے افراد کی تلاش شروع کردی ہے ممبئی پولس نے تو ممبئی کے مضافاتی علاقے باندرہ سمیت دیگر علاقوں میں جماعت میں شامل ہونے والوں کو تو قرنطینہ میں بھیج دیاہے جبکہ ممبئی میں بھی بیرون ملک کی جماعت تشریف لائی تھی جماعتوں میں شامل ان شرکا کے وجہ سے ریاست مہاراشٹر اور ممبئی میں بھی مریضوں کی تعدا د میں اضافہ درج کیا جانے کا اندیشہ ظاہر کیا گیا ہے ۔

دلی کےنظام الدین مرکز کے تار اب ممبئی اور ریاست سےبھی وابستہ ہو گئے ہیں نیرول میں فلپائن کی جماعت کے قیام و طعام کے سبب ایک شخص کی موت ہوئی ہے جبکہ چاراس سے متاثر ہوئے ہیں ۔ممبئی کی تین جماعتوں کے شرکا کی بھی پولس اور ڈاکٹر و بی ایم سی کے عملہ نے جانچ کی ہے اس میں کچھ شرکا کے کرونا مثبت پائے جانے اور اس کی علامت پائی گئی ہے ممبئی کے مختلف علاقوں میں اب پولس نےآپریشن کروناوائرس شروع کردیاہے اور تبلیغی جماعت میں شرکت کرنے والوں کی تلاش شروع کر دی ہے ۔ ممبئی کے پولس کمشنر پرم بیر سنگھ نے مسلمانوں سےاپیل کی ہے کہ وہ معاشرتی فاصلہ کی اہمیت و افادیت کو سمجھیں کیونکہ یہی اپنی جان بچانے کا ایک صحیح اور بہتر طریقہ ہے اس لئےمیری گزارش ہے کہ تبلیغی جماعت سمیت بیرون ممالک میں سفر کرنےوالے بذات خود آگے آ کر اپنی جانچ کروائیں اور قرنطینہ کی پابندی کریں کیونکہ ان کی اس غفلت کے سبب دیگر کو بھی کرونا وائرس کاشکار ہونا پڑسکتا ہے اس لئے میری تمام مذہبی پیشواؤں اور رہنما و قائدین سے درخواست ہے کہ وہ بلا اجازت اور چوری چھپے کوئی مذہبی تقریبات کا انعقاد نہ کریں جس سے انہیں بعد میں ہزیمت اٹھانی پڑے یا پولس کو ان کے خلاف کارروائی کرنے پرمجبور ہونا پڑے اس لئے میں سب سے ہاتھ جوڑ کر التجا کرتا ہوں کہ آپ معاشرتی فاصلہ کی تابعداری کریں کیونکہ کوئی بھی مذہب کسی دیگر کی جان کو خطرہ میں ڈالنا کا درس نہیں دیتا اسلام تو انسانیت کی قدروں کاہی مذہب ہے جس میں انسانیت کو ہی ترجیح دی گئی ہے

انہوں نے مزید کہا کہ شہریوں کی بھی یہ ذمہ داری ہے کہ وہ اپنے اطراف میں مقیم مکینوں کی بھی فکر کریں اور بلا اطلاع دئیے بیرون ملک سے آنے والوں کی خبر پولس و انتظامیہ کو دیں علاقوں میں ایسے افراد سے بھی مطلع کیا جائے جنہوں نے کسی اجتماع یا تبلیغی جماعت کی سرگرمیوں میں شرکت کی تھی پولس اپنے طور پر تمام حالات کا جائزہ لے رہی ہے ۔ 15اور 17 مارچ کو دلی کے نظام الدین مرکز میں اجتماع منعقد کیا گیاتھا جس میں بیرون ملک کی جماعتوں نے بھی شرکت کی تھی اسی طرح سے ان جماعتوں کے کئی مبلغین نے بھی ممبئی اور نئی ممبئی کا بھی رخ کیا تھا یہی وجہ ہے کہ اب ان جماعتوں اور کرونا وائرس کا تار ممبئی سے بھی وابستہ ہو گیا ہے اس کے ساتھ ہی کرونا کے مزید کیس سامنے آنے کے اندیشہ کو ظاہر کیا گیا ہے کرونا وائرس کے تبلیغی جماعت میں تصدیق کے بعد ممبئی میں بیرون ملک کی جماعت نے کن کن مساجد میں قیام و طعام کیا تھا اس کی بھی پولس جانچ کررہی ہے تاکہ اس وبائی اور مہلک مرض کی روک تھام کی سعی کی جائے ممبئی پولس کمشنر کی ہدایت پر ممبئی کے ایڈیشنل کمشنر ایس بی ون سنیل کولہے ۔ ڈی سی پی گنیش شندے کو ایسے حالات پر نگرانی کرنے کے ساتھ تبلیغی جماعتوں کی فہرست جمع کرنے کا بھی حکم دیا گیا تاکہ بروقت تبلیغی جماعت میں شامل شرکا کو قرنطینہ بھیجا جا سکے ممبئی میں اب تک دس کرونا مریضوں کی موت ہوئی ہے اس لئے اب ممبئی پولس نے اپنی مستعدی کا مظاہرہ کرتے ہوئے تمام علاقوں میں جانچ شروع کردی ہے ۔

پولس ایسے افراد کی تلاش کر رہی ہے کہ تبلیغی جماعت اور دیگراجتماعات میں شریک ہوئے تھے اور ان کے تمام رابطہ کاروں کی بھی تلاش کی جارہی ہے وہ ان شرکا کے رابطے میں تھے اس لئے پولس ہر مذہبی سرگرمیوں پر نظر رکھ رہی ہے اگر کوئی بھی لاک ڈاؤن کی خلاف ورزی کر کے مذہبی اجتماعات کرتے ہوئے پایا گیا تو اس کے خلاف سخت کارروائی ہو گی ۔