احمد آباد :۔ وزیراعظم نریندر مودی نے ملک کی عدلیہ کی ستائش کرتے ہوئے کہا کہ یہ عدلیہ عوام کے حقوق کی محافظ ہے ۔ وہ اپنا فرض بہتر طریقے سے ادا کررہی ہے ۔ شخصی آزادی کو برقرار رکھنے کے لیے عدلیہ کی کوششوں کی جتنی ستائش کی جائے کم ہے ۔ اس سے دستور مضبوط ہورہا ہے ۔ انہوں نے احمد آباد میں منعقدہ تقریب سے ورچولی خطاب کرتے ہوئے کہا کہ ہندوستان کی سپریم کورٹ نے کورونا وائرس وبا کے دوران جہاں تمام ملکوں کی اعلیٰ عدالتوں کے ساتھ مل کر کام کیا ہے وہیں ملک بھر کی تمام عدالتوں سے مربوط ویڈیو کانفرنس کے ذریعہ کئی کیسوں کی سماعت کی ہے ۔ مودی نے یہ بھی کہا کہ ملک کے نظامِ انصاف کو مستقبل میں بھی بہتر بنانے کے لیے مصنوعی انٹلیجنس کے استعمال پر بھی غور کیا جارہا ہے ۔ گجرات ہائی کورٹ کے 60 سال مکمل ہونے پر یادگاری ڈاک ٹکٹ کی اجرائی کے دوران وزیراعظم نے تقریر کرتے ہوئے کہا کہ ملک کا ہر شخص یہ کہہ سکتا ہے کہ ہماری عدلیہ نے ہمارے دستور کے اقدار کو برقرار رکھتے ہوئے کام کیا ہے ۔ ہماری اسی عدلیہ نے دستور کو مضبوط و مستحکم بنایا ہے ۔ عدلیہ کی مثبت کارروائی سے دستور مضبوط ہورہا ہے ۔ سپریم کورٹ نے وباء کے دوران ساری دنیا میں ویڈیو کانفرنسنگ کے ذریعہ کئی اہم کیسوں کی سماعت کی ہے ۔ ۔


اپنی رائے یہاں لکھیں