اسلام آباد ؛مفتی عبدالقوی کوتھپڑ لگنے کی ویڈی وسوشل میڈیاپروائرل ہوگئی ،اس حوالے سے حریم شاہ کاکہناہے کہ مفتی عبدالقوی دوروز سے ان کے ساتھ نازیباگفتگو کررہے تھے۔

انہوں نے کہاکہ صبرکاپیمانہ لبریز ہواتومیں نے اورمیری دوست نے انہیں مارا . دوسری جانب مفتی عبدالقوی کاکہناہے کہ تھپڑ حریم شاہ نے نہیں ان کی سیکرٹری عائشہ نے مارا،مقصد ویڈیووائرل کراکے لاکھ دولاکھ روپے کماناتھا،

قبل ازیں ویڈیو ز اینڈ فوٹوز شیئرنگ ایپ انسٹاگرام پرمفتی عبدالقوی کی ویڈیوشیئرکرتے ہوئے حریم شاہ نے لکھاتھاکہ مفتی عبدالقوی کوتھپڑ کیوں ماراگیااس کاجواب بہت جلد مل جائے گا۔

نہوں نے کہا کہ ہم نے ان کی گھٹیا گفتگو ریکارڈ کی ہے جسے سننے کے بعدہر کوئی تسلیم کرے گا کہ میں نے بالکل ٹھیک کیا۔ ان کی گفتگو اتنی گھٹیا ہوچکی تھی کہ میرا اور میری دوست کے صبر کا پیمانہ لبریز ہوگیا اور ہم نے مفتی قوی کو مارا۔

حریم شاہ کا کہنا تھا کہ انہیں مفتی قوی کو تھپڑ مارنے پر کوئی شرمندگی نہیں۔ اگر ایسے مردوں کو وقت پر سبق سکھا دیا جائے تو معاشرے سے ریپ کے واقعات ختم ہوجائیں۔

ان سے جب پوچھا گیا کہ مفتی قوی اپنے بیانات اور ویڈیوز کی وجہ سے پہلے ہی شہرت رکھتے ہیں تو آپ نے انہیں اتنا بے تکلف کیوں ہونے دیا۔ ٹک ٹاکر کی جانب سے اس سوال کا جواب نہیں دیا گیا۔

قبل ازیں ٹک ٹاکر حریم شاہ کے اکاؤنٹ سے آج ایک ویڈیو جاری کی گئی جس میں مفتی قوی کو تھپڑ مارتے ہوئے دکھایا گیا ہے۔ یہ ویڈیو جاری ہوتے ہی سوشل میڈیا پر وائرل ہوگئی۔

اطلاعات کے مطابق یہ واقعہ کراچی کے ایک نجی ہوٹل میں پیش آیا ہے۔ ایک نجی چینل سے بات کرتے ہوئے مفتی قوی نے اس بات کی تصدیق کی ہے کہ حریم شاہ نے ان کے منہ پر تھپڑ مارا ہے۔ انہوں نے بتایا کہ حریم شاہ اور انہیں ایک ٹی وی چینل کے پروگرام کی شرکت کے لیے بلایا گیا تھا اور وہ کراچی کے ہوٹل میں ٹھہرے ہوئے تھے، جہاں انہیں حریم شاہ نے تھپڑ دے مارا۔

تاہم ویڈیو وائرل ہونے کے بعد مفتی قوی کے سامنے آنے والے رد عمل میں انہوں نے اس کی وجہ نہیں بتائی جب کہ حریم شاہ نے اپنے سوشل میڈیا اکاؤنٹ پر اعلان کیا تھا کہ وہ بہت جلد مفتی قوی کو تھپڑ مارنے کی وجہ سامنے لائیں گی