مفتیِ اعظم مصرنے ٹیلی ویژن پیش کاراہلیہ کے قاتل جج کو پھانسی دینے کی منظوری دے دی

589

مصر کے مفتیِ اعظم نے جج ایمن حجاج اوران کے ایک شریک مجرم کو پھانسی دینے کی منظوری دے دی ہے۔

عدالت نے انھیں اگست میں حجاج کی ٹیلی ویژن پیش کار اہلیہ شیماء جمال کے قتل کے جرم میں قصور وار قرار دے کرسزائے موت سنائی تھی۔

حجاج اور ان کے ساتھی تاجرحسین الغرابلی کو ملک کی اعلیٰ مذہبی اتھارٹی کی جانب سے عدالتی سزا کی منظوری کے بعد تختہ دارپرلٹکا دیا جائے گا۔

واضح رہے کہ مفتیِ اعظم سزائے موت کے فیصلوں پر حتمی رائے دیتے ہیں اور انھیں ایسے مقدمات بھیجنا قانون کے مطابق فیصلے پر عمل درآمد سے قبل ایک رسمی کارروائی ہے.

عدالت نے ان دونوں کوجون میں حجاج کی اہلیہ شیماءجمال کے قتل کا مجرم قرار دیا تھا۔مقتولہ جیزہ کے ایل ٹی سی ٹی وی پر ایک شو پیش کیا کرتی تھیں۔مقتولہ کی لاش الغرابلی کی خفیہ اطلاع کے بعد ایک ولا سے ملی تھی۔اس نے اس جرم میں اپنے کردار کا اعتراف کیا تھا۔حجاج نے اس سے تین ہفتے قبل اپنی بیوی کے لاپتا ہونے کی اطلاع دی تھی۔