سودبیز نے کہا: ‘اگرچہ عام عینک محض بینائی کو بہتر بنانے کا کام کرتے ہیں مگر یہ فلٹر روحانی روشن خیالی کے لیے تھے کیونکہ ہیرے روشن کرنے کے لیے سمجھے جاتے ہیں جبکہ زمرد کے بارے میں کہا جاتا ہے کہ اس میں شفا ہے اور بری طاقتوں سے بچنے کے لیے اس میں معجزاتی طاقتیں ہوتی ہیں۔’

نیلام گھر کے مطابق تاریخ اور فسانوں میں اس طرح کے عینکوں کی ‘سب سے مشہور جلوہ گری’ پلینی دی ایلڈر کی ‘نیچرل ہسٹری’ میں مل سکتی ہے جس میں قدیم رومی بادشاہ نیرو قیمتی سبز پتھر کی سطح سے گلیڈی ایٹر مقابلوں کا مشاہدہ کرتے ہیں۔

بیان میں کہا گیا ہے کہ نیرو کے استاد سینیکا لائٹ ریفریکشن، آئینے اور آپٹکس میں ماہر تھے، اور ان کے بارے میں خیال کیا جاتا تھا کہ یہ پہلے چشموں میں سے ایک ہیں۔