مقبوضہ بیت المقدس: اسرائیلی فوج نے مغربی کنارے میں یہودی آباد کاری کے لیے قائم غیر قانونی بستیوں کے خلاف مظاہرے میں 108 فلسطینیوں کو زخمی کردیا۔ فلسطینیوں نے مقبوضہ مغربی کنارے کے مختلف علاقوں میں قابض یہودی آباد کاریوں کے خلاف مظاہرے کیے۔ اسرائیلی فوجیوں نے ربرکی گولیوں اور آنسو گیس سے مظاہرین کو منتشر کرنے کی کوشش کی۔ اس تشدد کے نتیجے میں 108 فلسطینی زخمی ہوئے ، ان میں سے 68 ربر کی گولیوں کا نشانہ بنے اور درجنوں گیس سے متاثر ہوئے۔ زخمیوں میں 2 فوٹو جرنلسٹ بھی شامل ہیں ، جن میں سے ایک آزادانہ فوٹو جرنلسٹ بھی تھا، جو اناطولیہ ایجنسی سے تعلق رکھنے والا ندال ایشتیے تھا۔ ان کا کہنا تھا کہ اسرائیلی فوج نے صحافیوں کو براہ راست ربر کی گولیوں سے نشانہ بنایا اور اس کے بائیں ٹانگ میں 3 گولیاں لگی۔ سول یہودی قابض ہونے کی وجہ سے ان علاقوں میں کنٹینر مکانات کے چھوٹے چھوٹے کیمپ لگانے کی کوشش کر رہے ہیں۔ ان کیمپوں میں بعد میں دیگر ڈھانچے شامل کردیے گئے ، اس طرح غیر قانونی آباد کاریوں کی نشوونما میں تیزی آئی۔ فلسطین میں ساڑھے 4لاکھ سے زیادہ غیر یہودی آباد ہیں۔


اپنی رائے یہاں لکھیں