ناندیڑ:11اپریل(ورق تازہ نیوز) ایڈیشنل سیشن جج ششی کانت بانگر نے ایک شخص کو اپنی گرل فرینڈ کے چار سالہ بیٹے کو شراب کے نشے میں بے ہوش ہونے کے بعد قتل کرنے کے جرم میں 10 سال کی سخت مشقت اور 50,000 روپے جرمانے کی سزا سنائی ہے۔تفصیلات کے مطابق 8 مارچ 2017 کو ماہور پولس اسٹیشن میں شکایت درج کرائی گئی کہ نندا دتا نامی ایک خاتون جو کہ یسن پورے، سالوڈ (کرشنا پور) ضلع ایوت محل کی رہنے والی تھی، اس کے شوہر کا آٹھ ماہ قبل انتقال ہوگیا تھا۔اس کے بعد اسے وکاس ڈگمبر لنجیوار (28) ساکن سکلی تعلقہ کارنجہ، ضلع واشیم سے محبت ہوگئی ۔

25 فروری 2017 کو وکاس اسے اور اس کے بیٹے کو لے کر ایوت محل گیا اور ایک دو پہیہ گاڑی پر روانہ ہوا اور یہ کہا کہ ایوت محل جا کر تمہاری نرادھار فائل بناﺅں گا مگر ایوت محل نہ جاتے ہوئے ماہور پہنچ گئے۔یہاں پرہوٹل رودرا ( لاج) میں کمرہ بک کروایا ۔28 فروری کو 8 بجے شام کو ایک چار سالہ لڑکا آدیش عرف ڈگمبر رونے لگا، پھر وکاس نے اسے شراب پلائی۔جس کے بعد بچہ بے ہوش ہوگیا جس کے بعد ویکاس نے معصوم بچے کے جسم پر کئی جگہوں پر سگریٹ کے چٹکے دئےے اسکے باوجود لڑکا کوئی ہلچل نہیں کررہاتھا۔اسے ایک پرائیویٹ اسپتال، ایک سرکاری اسپتال لے جایا گیا لیکن ڈاکٹرس نے کہا لڑکے کا علاج ہمارے پاس نہیںہوتا۔ اسکے بعدیکم مارچ 2017 کو موگھے سانگوی ضلع وردھا لے گئے جہاں پر دوران علاج ہی معصوم آدیش نے آخری سانس لی ۔بیٹے کی موت کے بعدنندا دماغی طورپرپریشان ہوگئی تھی ۔

بیٹے کی موت کیلئے ذمہ دار اپنے عاشق کے خلاف 8 مارچ 2017 کو شکایت درج کروائی۔ماہور کے اس وقت کے اسسٹنٹ انسپکٹر شیو پرساد مولے نے تعزیرات ہند کی دفعہ 302 کے تحت مقدمہ نمبر 28/2017 درج کیا۔چار سالہ لڑکے آدیش عرف ڈگمبر کے قاتل وکاس ڈگمبر لنجوار کو گرفتار کر لیا گیا۔ عدالت میںمقدمہ زیرسماعت رہا اوراب تقریبا چھ سال بعد نندا کو انصاف ملا اور ملزم ویکاس کو 10 سال سخت مشقت اور 50,000 روپے نقد جرمانے کی سزا سنائی گئی۔ جرمانہ ادا نہ کرنے کی صورت میں 2 سال سخت مشقت کی تجویز ہے۔