مسلم لڑکی کی ہندو نوجوان سے شادی‘اب جان کا خطرہ

0 27

بریلی:24مئی (ورق تازہ نیوز) اترپردیش کے بریلی میں ایک مسلمان لڑکی نے مذہب تبدیل کرکے ہندو لڑکے بوبی سے شادی کرلی۔ لبنیٰ نام تبدیل کرنے والی اس لڑکی کی زندگی اب خطرے میں ہے۔ اس نے ایک وائرل ویڈیو بنایا ہے، جس میں وہ اپنا نام آروہی بتارہی ہے اور کہہ رہی ہے کہ، آپ سب ہاتھ جوڑ کر درخواست ہے کہ ہماری زندگی میں مداخلت کی کوشش نہ کریں۔ ساتھ ہی وہ اپنے چچا کو جان سے مارنے کی کوشش کرنے کی بات کر رہی ہے۔

ہندو لڑکا اور مسلمان لڑکی دونوں ایک ہی علاقے میں رہتے ہیں۔ دونوں کئی سالوں سے محبت کررہے تھے۔ 20 مئی کی دوپہر کو دونوں گھر سے نکلے اور مندر میں ہندو رسم و رواج کے مطابق شادی کی۔ لبنیٰ سے آوہی بننے والی لڑکی کا کہنا ہے کہ وہ مسلم مذہب کو پسند نہیں کرتی۔ مسلم مذہب میں تین طلاق اور حلالہ ہے۔ اس نے اپنا برقع اور حجاب اتار دیا ہے۔ اس نے اہل خانہ پر اسے قتل کرنے کی کوشش کرنے کا الزام لگایا ہے۔ ویڈیو وائرل کرکے اس نے پولیس انتظامیہ سے اپنی اور اپنے شوہر کی جان کی حفاظت کی اپیل کی ہے۔

اسی وقت، بوبی نے کہا آروہی کے خاندان کی طرف سے ان کے خاندان کو ہراساں کیا جا رہا ہے۔ ساتھ ہی وہ پنڈت، جنہوں نے آروہی اور بوبی کی شادی کروائی تھی نے کہا کہ اسے بھی جان کا خطرہ ہے۔اس نے کہا کہ جب وہ دونوں میرے پاس آئے تو میں نے دیکھا کہ وہ دونوں بالغ ہیں اور اپنی مرضی سے شادی کرنا چاہتے ہیں۔اسلئے ہم دونوں نے آریہ سماج کے رسم و رواج کے مطابق شادی کی۔