وجے پورہ:کرناٹک میں مبینہ طور پر ’آنر کلنگ‘ (جھوٹی شان) کا معاملہ سامنے آیا ہے جس میں ایک مسلم لڑکی کے ساتھ ساتھ ایک دلت لڑکے کا پیٹ پیٹ کر بہیمانہ طور پر قتل کر دیا گیا۔ واقعہ کرناٹک کے وجے پورہ ضلع کا بتایا جا رہا ہے جہاں مسلم لڑکی کے کنبہ پر الزام عائد کیا گیا ہے کہ انھوں نے ہی کچھ لوگوں کے ساتھ مل کر دونوں کی بے رحمی سے پٹائی کر دی جس سے جائے وقوع پر ہی ان کی موت ہو گئی۔ خبروں کے مطابق دونوں ایک دوسرے سے محبت کرتے تھے اور یہ بات لڑکی کے گھر والوں کو پسند نہیں تھی۔

وجے پورہ کے پولیس سپرنٹنڈنٹ انوپم اگروال کا کہنا ہے کہ لڑکی کے والد اور اس کے بھائی سمیت چار لوگوں کو گرفتار کیا گیا ہے اور ایک شخص فرار ہے جس کی تلاش زور و شور سے جاری ہے۔ بتایا جاتا ہے کہ واقعہ گزشتہ منگل کا ہے جب 19 سالہ دلت نوجوان بسوراجو اور 16 سالہ مسلم لڑکی داوالابی پر پانچ لوگوں نے لاٹھی ڈنڈوں اور پتھر سے حملہ کر دیا۔ مسلم کنبہ نے قبل میں لڑکے سے کہا تھا کہ وہ لڑکی سے دور رہے، لیکن اس نے بات نہیں مانی۔ پولیس کا کہنا ہے کہ منگل کی دوپہر جب لڑکا اور لڑکی ایک کھیت میں تھے تبھی لڑکی کے والد اور بھائی تین دیگر لوگوں کے ساتھ وہاں پہنچ گئے اور دونوں پر پتھر و لاٹھیوں سے حملہ کر دیا۔ قتل کرنے کے بعد ملزمین وہاں سے فرار ہو گئے۔

اس حادثہ کی جانکاری ملنے کے بعد پولیس کی ٹیم جائے وقوع پر پہنچی اور لاشوں کو پوسٹ مارٹم کے لیے بھیجا۔ مبینہ طور پر آنر کلنگ کے اس واقعہ میں فوری کارروائی کرتے ہوئے دو ملزمین کو بدھ کے روز گرفتار کیا گیا جب کہ دو ملزمین کی گرفتاری آج (جمعرات) ہوئی ہے۔ پولیس کا کہنا ہے کہ قصورواروں کو چھوڑا نہیں جائے گا، انھیں سخت سے سخت سزا دی جائے گی تاکہ آئندہ سے کوئی بھی اس طرح کا واقعہ انجام دینے سے پہلے نتیجہ کے بارے میں سوچ لے۔