بھوپال، 15 نومبر (یو این آئی) مسلم خواتین نے وزیر اعظم نریندر مودی کے آج بھوپال کے دورے کے دوران سخت حفاظتی انتظامات کے باوجود ‘تین طلاق’ کے معاملے پر ان کا شکریہ ادا کرنے کے لیے ایک گروپ میں استقبال کیا۔دراصل، مسٹر مودی رانی کملا پتی ریلوے اسٹیشن کے افتتاح کے لیے تقریباً ایک کلومیٹر دور برکت اللہ یونیورسٹی کیمپس میں بنائے گئے ہیلی پیڈ سے بذریعہ سڑک اسٹیشن جانے والے تھے۔ اس سڑک کے آس پاس رہائشی علاقہ ہونے کی وجہ سے سخت حفاظتی انتظامات کے درمیان سڑک کے دونوں طرف شہریوں کا ہجوم کھڑا تھا۔ ان میں برقعہ پوش مسلمان خواتین بھی شامل تھیں۔


مسٹر مودی کی گاڑیوں کا قافلہ ہیلی پیڈ سے ریلوے اسٹیشن تک سڑک پر نسبتاً سست رفتاری سے آگے بڑھ رہا تھا اور شہری ہاتھ ہلا کر مسٹر مودی کا استقبال کر رہے تھے، ان کی حمایت میں نعرے لگا رہے تھے۔ مسٹر مودی بھی سیاہ رنگ کی بلٹ پروف کار میں ہاتھ ہلا کر لوگوں کا استقبال اور شکریہ ادا کر رہے تھے۔ اس دوران مسلم خواتین نے بھی مسٹر مودی کو خوش آمدید کہا۔
ان خواتین کی قیادت کرنے والی خاتون نے ایک نیوز چینل کو بتایا کہ مسٹر مودی نے ہمیں تین طلاق سے نجات دلائی ہے۔ انہوں نے تین طلاق کو روکنے کے لیے قانون بنا کر بے مثال کام کیا ہے۔ اسی لیے وہ یہاں مسٹر مودی کا استقبال کرنے آئی ہیں۔
ریاستی بی جے پی کے میڈیا انچارج لوکیندر پراشر نے ٹویٹر پر اس واقعہ کا منظر پوسٹ کرتے ہوئے لکھا، ‘کامیاب وزیر اعظم نریندر مودی جی کا بھوپال پہنچنے پر پرتپاک روایتی استقبال کیا گیا۔ خاص طور پر مسلم خواتین نے تین طلاق قانون کی حمایت میں اپنی تاریخی حمایت کا اظہار کیا۔

ورق تازہ نیوز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں  https://t.me/waraquetazaonlineاور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔