سوئس ٹائم پیس ڈیزائنر آرمیڈز نے مسلمانوں کے مذہبی اعمال کی نشان دہی کرنے والی ایک منفرد گھڑی تیار کی ہے۔ مکہ مجموعہ کے نام اس گھڑی میں ایسے افعال شامل کیے گئے ہیں جو مسلمانوں کو ان کے مذہب کے کلیدی طریقوں کا مشاہدہ کرنے میں مدد دیتے ہیں۔

اسلامی عقیدے پرعمل کرنے کے لیے مکہ (قبلہ) کی سمت، روزمرہ نماز(صلوٰۃ) کے اوقات اور رمضان المبارک (صوم)کے روزے کے اوقات کاعلم ہونا چاہیے۔

اس گھڑی ساز کمپنی کے شریک بانی اور چیف آئیڈیا آفیسر(سی آئی او)اسٹوبی پاسکل کاکہنا ہے کہ ’’ہم اس خیال سے متاثر ہوئے تھے کہ ایک گھڑی ان تمام کاموں کوکیسے پورا کر سکتی ہے۔پھرسوال صرف یہ تھا کہ یہ کیسے کیا جائے؟‘‘

مطلوبہ پیچیدہ حساب کتاب اور اشاروں کی حقیقی وقت کے ساتھ ایڈجسٹمنٹ کی وجہ سے روایتی میکانیکی تحریک میں ان افعال کوتخلیق کرنا ناممکن ہے۔اس مسئلے کو حل کرنے کے لیے آرمیڈزکی ٹیم نے ایک ہائی ٹیک الیکٹرانک جزو ڈیزائن اورتیارکیا جو میکانیکی حرکت کے ساتھ گھڑی کے کیس سے مربوط ہے۔ متعلقہ سافٹ ویئر موبائل ریڈیو سہ رخی کے ذریعے پہننے والے کے مقام کا حساب لگاتا ہے اور گھڑی ذیلی ڈائلز پر معلومات دکھاتی ہے۔

گھڑی کامالک گھڑی کوابتدائی اورمعیاری اوقات کو مقرر کرنے کے لیے ماسٹرٹائمر فون ایپ کا استعمال کرتا ہے، گھڑی کے کیس پر 2 بجے پشرکا استعمال کرتے ہوئے اسے بلوٹوتھ کے ذریعے جوڑتا ہے۔ایک بارمعیاری وقت سیٹ ہونے کے بعد، گھڑی اوراس کا ماڈیول ایپ اور فون سے آزادانہ طور پر کام کرتے ہیں۔

جب مالک مکہ کے مقابلے میں مقام میں نمایاں تبدیلی کرتا ہے تو ان کے فون پر ایک نوٹی فیکیشن ظاہر ہوتا ہے جس میں صارف سے پوچھا جاتا ہے کہ کیا وہ گھڑی پر موجود مقام کو اپ ڈیٹ کرنا چاہتے ہیں۔آرمیکس کے شریک بانی ٹام مورف بتاتے ہیں کہ ایسی گھڑی تیار کرنےکی ترغیب ان کے شریک بانی کے ساتھ دوپہر کے کھانے پر مباحثوں کے دوران میں ملی تھی جہاں وہ ہمیشہ ٹائم پیس ڈیزائن کے بارے میں بات کرتے رہے ہیں۔

انھوں نے کہا کہ ہماری گفتگو ریاضی، فلکیات اور بہت سے دوسرے موضوعات پر تاریخ میں اسلامی دنیا کی عظیم کامیابیوں کی طرف مرکوز رہی ہے اور ہم نے مکہ کی سمت میں دن میں پانچ بار نماز کی روزانہ کی مشق اوررمضان المبارک کے مقدس مہینے میں سال میں ایک بار روزے رکھنے کے بارے میں بات کی۔’’یہی وہ مقام تھاجہاں سے یہ سب شروع ہواتھا اورجہاں ہمیں مزید کھوج کی تحریک ملی۔اب سوال یہ پیدا ہوا کہ کیا ایسا کچھ ہے جو پہلے ہی ایک پریمیم لگژری واچ میں موجود ہے (مگر ایسا نہیں تھا) اور ان تینوں عناصر کو ملانے کے لیے تکنیکی طور پربڑے چیلنجوں سے کیسے نمٹاجاسکتا ہے۔‘‘

اسلام کی بنیادی تعلیمات کو دیکھتے ہوئے ایک ایسے ٹائم پیس کی ضرروت تھی جو مذہب کے تمام موضوعات کا احاطہ کرتا ہولیکن مکہ مجموعہ کے آغازتک ایسا کچھ نہیں تھا۔مورف نے کہا کہ ’’میں سمجھتا ہوں کہ چونکہ مذہب ایک ایسا موضوع ہے جو کافی حساس ہوسکتا ہے لیکن ہم نے اس کے ساتھ انتہائی احترام معاملہ کیا ہے اور اس ضمن میں اپنے مسلم روابط کو بروئے کار لائے ہیں‘‘۔

سادہ اور فنکشنل ڈیزائن کے آرمیڈز فلسفے کو مدنظر رکھتے ہوئے، واچ باکس سوئٹزرلینڈ میں مکمل طور پر پائیدارمواد سے تیار کیا جاتا ہے۔اس میں قریبی فیلڈ کمیونیکیشن (این ایف سی) چپ نصب ہے۔مالک اپنا اسمارٹ فون اس چپ کے اوپررکھتا ہے اور اسے آرمیڈز ماسٹرٹائمر ایپ ڈاؤن لوڈ اور انسٹال کرنے کے لنک پر لے جایا جاتا ہے۔اس کی تصدیق ایک مائیکرو مہرکے ذریعے کی جاتی ہے،جسے ایک مشین تیار کرتی ہے۔یہ مہرسوئس بنک نوٹوں پر سیکورٹی فیچرزکے لیے بھی استعمال کی جاتی ہے۔

1960ءاور70 کی دہائی کے انداز کی بازگشت کے ساتھ، ڈیزائن میں محدب باکس کی شکل کے نیلم کرسٹل کے ساتھ اسٹیل کے کیس اور برش اور پالش شدہ کا امتزاج ہے۔ کلاسیکی عمدہ گھڑی سازی کی تفصیل میں سنہرے برش ڈائل اوراطلاقی گھنٹے کے مارکر شامل ہیں۔

آرمیڈز کی مکہ کولیکشن چارماڈلز پر مشتمل ہے، یہ سب سٹین لیس اسٹیل کے کیس والی ہیں، لیکن درخواست پر پلاٹینم میں بھی دستیاب ہے۔ گھڑی کی قیمتیں 6,000 ڈالر سے 163,000 ڈالر تک ہیں۔

مکہ مجموعہ کے علاوہ آرمیڈزکے پورٹ فولیو میں زیورخ کولیکشن بھی موجود ہے۔ یہ مجموعہ غیرمسلموں کو پسند آسکتا ہے۔کمپنی کا کہنا ہے کہ’’ہم نے اس خالص میکانیکی مجموعہ پرصارفین کا زبردست ردعمل دیکھا ہے۔ہم دیگرموضوعات پر بھی کام کرنا چاہتے ہیں اور ہمیں خوشی ہے کہ اب ہمارے پاس ایسا کرنے کی ٹیکنالوجی موجود ہے۔‘‘

ورق تازہ نیوز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں  https://t.me/waraquetazaonlineاور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔