جلگاؤں (سعید پٹیل)نندوربار شہر سے موصول خبر کے مطابق یہاں کے چراغ علی محلہ کی مسجد میں نماز ہونے کے بعد اذان کون دےگا۔اس پر نمازیوں کے درمیان میں تنازعہ ہونے کی وجہ سے نماز ختم ہونے کے بعد دو نمازی مسجد سے باہر آۓ اور آپس میں جھگڑنے لگے یہ تنازعہ میں بات مارپیٹ تک جاپہونچی۔جس میں ٤ افراد زخمی ہوۓ۔ان کا ضلع ہسپتال میں علاج کیا جارہا ہے۔

گذشتہ روز شام 8 بجے کے بعد دو افراد کے درمیان اس بات پر تنازعہ پیدا ہوگیاکہ اذان کون دےگا۔یہ تنازعہ مارپیٹ میں بدل گیا۔جس میں ٤ افراد کے زخمی ہوۓ ہیں۔اسی دوران واقعے کی اطلاع ملتے ہی ضلع ایس۔پی اور تمام اعلی افسران اور شہر پولیس اسٹیشن کادستہ فوری طور پر جاۓ واقعہ پہونچ کر حالات کو قابوں میں کیا۔

اس واقعے میں جاۓ واقعے سے مارپیٹ میں ملوث دو افراد کو گذشتہ روز شام میں پولیس نے اپنے قبضے میں لےلیاتھا۔ جبکہ زخمیوں کو فوری طور پر ضلع اسپتال میں داخل کیاگیاہے۔جہاں زخمیوں کا علاج کیا جارہا ہے۔بعدازاں اس معاملے میں مجموعی طورپر ٢١ افراد کے خلاف ٤١٠ ،٤١١ کے تحت ٣٠٧ اور ٤٢٧ کا معاملہ درج کیاگیا ہے جبکہ کووڈ ١٩ کی شرائط کی خلاف ورزی کرنے کی دفعات کے تحت کاروائ کی گئ ہیں۔

مذکورہ بالا تنازعہ گذشتہ شام 8بجے اذان کون دےگا ،اس مسلہ کو لیکر بات بڑے نےپر مار پیٹ تک طول پکڑ گیا۔لاٹھیوں کا استعمال کیاگیا۔جس میں ٤ افراد زخمی ہوۓ ہیں۔زخمیوں کو ضلع سول اسپتال میں علاج کےلۓ داخل کیاگیا ہے۔جبکہ علاقہ میں پولیس کا بندوبست بڑھا دیاگیا ہے۔