ریاض : مکہ مکرمہ میں 17 برس سے مسجد حرام کے اندر خدمت کا شرف حاصل کرنے والے سری لنکن گھرانے نے اس سعادت پر اپنی مسرت کا اظہار کیا ہے۔شوہر اور بیوی کا یہ جوڑا حرم کی کے خدام میں شامل تقریبا 12 ہزار کارکنان میں شامل ہے۔

اس کہانی کا آغاز 17 برس قبل ہوا تھا جب سری لنکن مسلم خاتون فاطمہ کو حرم مکی میں زائرین اور معتمرین کی خدمت کے لیے سعودی عرب جانے کا موقع ملا۔ فاطمہ نے چند برس بعد درخواست دی کہ اس کی تنہائی دور کرنے کے لیے اس کے شوہر اشرف کو بھی سعودی عرب آنے کی اجازت دی جائے۔فاطمہ کے مطابق وہ حرم شریف میں قالینوں اور جائے نمازوں کے شعبے میں خدمات انجام دیتی تھی۔