مسجد اقصٰی کی حفاظت صرف فلسطینی مسلمانوں کی ذمہ داری نہیں بلکہ پوری امت مسلمہ کا فرض ہے: الحاج محمد سعید نوری

0 2

جمعتہ الوداع کو ممبئی کی مساجد میں بیت المقدس اور فلسطینی مسلمانوں کے لیے دعاؤں کا اہتمام کیا گیا.سنی مسجد بلال کے باہر مسجد اقصٰی اور فلسطینی مسلمانوں سے ہمدردی کے اظہار کے لیے سید معین میاں کی قیادت میں رضا اکیڈمی کا زبردست مظاہرہ

ویڈیو

ممبئی : سعودی عرب سمیت تمام مسلم ممالک متحد ہوکر اسرائیل کی غنڈہ گردی کو لگام دیں ،فلسطینی مسلمانوں پر اسرائیلی ظلم وتشدد روز بروز بڑھتا ہی جا رہا ہے اس لیے اب وقت آگیا ہے کہ اسرائیل کے خلاف عرب ممالک کڑا رخ اختیار کریں، اس طرح کا مطالبہ پیر طریقت سید معین میاں اشرف الجیلانی نے ممبئی میں رضا اکیڈمی کے زیر اہتمام سنی مسجد بلال کے باہر بیت المقدس اور فلسطینی مسلمانوں سے اظہار محبت کے لیے کیے گئے ایک زبردست مظاہرے کے دوران کیا ، نعرہ ء تکبیر اللہ اکبر، مسجد اقصٰی زندہ باد، فلسطینی مسلمان زندہ باد اور اسرائیلی دہشت گردی مردہ آباد کے فلک شگاف نعروں کی گونج میں آپ نے فرمایا کہ فلسطین میں جاری اسرائیلی فوجیوں کی دہشت گردی پر عالمی برادری کی خاموشی بھی افسوس ناک ہے ، اقوام متحدہ تماشائی بنے رہنے کی بجائے اسرائیل کو عالمی قوانین کی پاسداری کرنے کے احکامات جاری کرے اور اس پر عمل درآمد کے لیے اسے مجبور کیا جائے، واضح رہے کہ الوداع جمعہ کو ہرسال کی طرح اس سال بھی یوم القدس کے طور پر منانے کی اپیل رضا اکیڈمی اور دیگر مسلم تنظیموں کی جانب سے کی گئی تھی، اطلاع کے مطابق ممبئی اور اطراف واکناف کے شہروں کی اکثر مساجد میں آج نماز جمعہ کے بعد مسجد اقصٰی اور فلسطین سمیت پورے عالم اسلام کے مسلمانوں کے لیے خصوصی دعاؤں کا اہتمام کیا گیا.

رضا اکیڈمی کے سربراہ الحاج محمد سعید نوری نے اس موقع پر کہا کہ مسجد اقصٰی کسی ایک جماعت یا تنظیم کا مسئلہ نہیں ہے بلکہ اس سے پوری امت مسلمہ کے ایمانی و مذہبی جذبات وابستہ ہیں، مسجد اقصٰی کی حفاظت صرف فلسطینیوں کی ذمہ داری نہیں بلکہ ہر مسلمان کا فرض ہے .

موصوف نے کہا کہ اسلامی ملکوں پر بھی لازم اور ضروری ہے کہ وہ مسجد اقصٰی کے تحفظ کے لیے آگے بڑھیں لیکن افسوس کہ سعودی عرب سمیت تمام مسلم ممالک کے سربراہان خواب غفلت میں پڑے ہوئے ہیں، ایسا لگ رہا ہے جیسے انہیں اس بات کی خبر ہی نہیں ہے کہ مسجد اقصٰی ہی وہ مسجد ہے، جس کے لیے آخر زمانے میں پوری امت مسلمہ حضرت امام مہدی علیہ السلام کے پرچم کے سائے میں جمع ہوگی، آپ نے کہا کہ اللہ تبارک و تعالیٰ، مسجد اقصٰی کے لیے ہم سب کی کاوشوں کو اخیر زمانے میں آنے والی اس فاتح جماعت کے حق میں قبول فرمائے، جس کے سردار حضرت امام مہدی علیہ السلام ہوں گے، اس مظاہرے کا اختتام حضرت سید معین اشرف میاں اشرفی الجیلانی کی رقت انگیز دعا پر ہوا، جس میں آپ نے مسجد اقصٰی اور فلسطینی مسلمانوں کے ساتھ ساتھ پورے عالم اسلام کے مسلمانوں کے لیے دعا فرمائی، داعش کی دہشت گردانہ سرگرمیوں کی شدید مذمت بھی اس مظاہرے میں کی گئی اور واضح طور پر اس بات کا اظہار کیا گیا کہ داعش اور isis کی دہشت گردانہ کارروائیوں کا اسلام اور مسلمانوں سے کوئی تعلق نہیں ہے اور داعش کو جڑ سے ختم کرنے کے لیے عالمی کوششوں کا پوری دنیا کے مسلمان خیر مقدم کرتے ہیں .