مرغی نے ایک دن میں 31 انڈے دیئے ،وجہ یہ رہی

1,885

باسوٹ میں مونگ پھلی اور لہسن کھانے کی شوقین مرغی نے ایک دن میں 31 انڈے دے کر سب کو حیران کر دیا ہے۔ خاص بات یہ ہے کہ مرغی کو کسی قسم کی بیماری نہیں ہے اور یہ مکمل طور پر صحت مند ہے۔ خیال رہے کہ باسوٹ کے رہنے والے گریش چندر بودھانی ٹور اینڈ ٹریول کا کام کرتے ہیں۔

ان کے بچوں کو مرغیاں پالنے کی خواہش تھی اور وہ کہیں سے چار سو روپے میں دو چوزے خرید لائے۔ گریش چندر بتاتے ہیں کہ جب یہ مرغی کے چوزے گھر میں آئے تو انہیں اپنے بچوں کی طرح بڑی محبت سے ان کی پرورش کی۔ وہ ان کے ساتھ اپنے خاندان کے افراد جیسا سلوک کرتے ہیں۔ نیز۔ انہوں نے یہ مرغیاں کاروبار کے لحاظ سے نہیں خریدی۔

گریش چندر بودھانی کے بیٹے پیتامبر دت بودھانی نے بتایا کہ ان مرغیوں کو لائے تین چار ماہ ہوئے ہیں۔ وہ اکثر ٹور اینڈ ٹریولز کے کام کے سلسلے میں باہر جاتے ہیں۔ گزشتہ اتوار کو ان کے بچوں نے بتایا کہ ان کی ایک مرغی نے 5 انڈے دیئے ہیں۔ یہ سن کر انہیں یقین نہیں ہوا، ان کی مرغی نے اتنے کم وقت میں ایک ساتھ 5 انڈے دیئے۔ شام کو جب وہ گھر آئے تو دیکھا کہ بات بالکل سچ ہے۔ وہ اس سے بھی زیادہ حیران تو اس وقت ہو گئے جب وہ 10 سے 15 منٹ میں 10-10 انڈے دینے لگی۔ انہوں نے بتایا کہ 25 دسمبر کو جب وہ کام کے لیے باہر گئے تو ان کے بچوں نے مرغی کو اپنے ساتھ کمرے میں رکھا۔

گریش چندر بدھانی نے بتایا کہ اتوار 25 دسمبر کو جب وہ شام 5 بجے تک گھر واپس آئے تو ان کی مرغی مسلسل دو دو انڈے دے رہی تھی۔ اس طرح رات 10 بجے تک اس نے پورے 31 انڈے دے ڈالے۔ یہ دیکھ کر وہ بہت حیران ہو گئے۔ گریش چندر نے بتایا کہ یہ سب دیکھ کر انہیں شک ہوا کہ شاید ان کی مرغی بیمار ہے لیکن ڈاکٹر نے انہیں بتایا کہ وہ مکمل طور پر صحت مند ہے۔ پھر انہیں شک ہوا کہ ان کی مرغی پر اوپری ہوا کا اثر ہے۔ انہوں نے اپنے والد سے رابطہ کیا اور انہیں سارا واقعہ سنایا۔ تاہم، مرغی پوری طرح صحت مند نظر آتی ہے۔

اب ایک بڑا سوال یہ ہے کہ یہ سب کیسے ممکن ہے؟ ایک مرغی ایک دن میں 31 انڈے کیسے دے سکتی ہے؟ اس بارے میں کوئی ماہر سائنس دان ہی بتا سکتا ہے۔ اس کے باوجود دیکھنے والی بات یہ ہے کہ اس خاندان نے مرغی کو اپنے بچے کی طرح پالا ہے۔ اس نے اتنا پیار دیا ہے جتنا کوئی اپنے بچوں کو دیتا ہے۔ اس کے علاوہ گریش چندر کے مطابق ان کی مرغی کو مونگ پھلی کھانے کا بہت شوق ہے۔ وہ ایک دن میں تقریباً 200 گرام مونگ پھلی کھا جاتی ہے۔ وہ اپنی دونوں مرغیوں کے لیے دہلی سے ایک ساتھ مونگ پھلی لے کر آتے ہیں۔

مونگ پھلی کے علاوہ لہسن بھی مرغیوں کی روزمرہ کی خوراک میں شامل ہے۔ ایسا لگتا ہے کہ اس حیرت انگیز کارنامے کے پیچھے مرغی کی خاص خوراک اور پیار بھی ہو سکتا ہے۔

اس حیرت انگیز مرغی کو دیکھنے کے لیے علاقے کے تمام لوگ، عوامی نمائندے گریش چندر کے گھر پہنچ رہے ہیں۔ جو بھی یہ سب دیکھتا ہے حیران رہ جاتا ہے۔ ایک مرغی جو گھر کی عام خوراک لیتی ہے ایک ہی دن میں اتنے انڈے دے چکی ہے۔ اس طرح کا معاملہ اس سے پہلے کہیں نہ دیکھا گیا اور نہ سنا گیا۔ اسی لیے لوگوں نے گریش چندر بدھانی کی مرغی کا نام گنیز بک آف ورلڈ ریکارڈ میں درج کرانے کا مطالبہ شروع کر دیا ہے۔