نئی دہلی : سپریم کورٹ نے جمعرات کو کہاکہ جموں میں محروس روہنگیا افراد کو تمام ضوابط کی تکمیل کئے بغیر میانمار کو واپس نہیں بھیجا جائے گا۔ چیف جسٹس شرد بوبڈے کی بنچ نے یہ حکمنامہ ایک عرضی پر جاری کیا جس کے ذریعہ استدعا کی گئی ہے کہ جموں میں محروس روہنگیا پناہ گزینوں کی فوری رہائی عمل میں لائی جائے۔ نیز مرکز کو روہنگیاؤں کو میانمار واپس بھیج دینے سے روکنے کی ہدایت بھی جاری کی جائے۔ مرکز نے قبل ازیں اِس عرضی کی مخالفت کرتے ہوئے کہا تھا کہ ملک غیر قانونی تارکین وطن کا ’’دارالحکومت‘‘ نہیں بن سکتا ہے۔ میانمار میں تشدد کے بعد روہنگیا قبائیلی بیرون ملک منتقل ہوگئے ہیں۔


اپنی رائے یہاں لکھیں