محرم ، گنیش اتسواوردہی ہنڈی پر عائد پابندیاں ہٹائی گئیں

575

 ممبئی:۔(محمدیوسف رانا) گزشتہ۲؍ سالوں میں کورونا کی وجہ سے تمام تہواروں پر پابندیاں تھیں اس ضمن میں وزیر اعلیٰ ایکناتھ شندے نے بڑا اعلان کیا ہےکہ اس سال کسی بھی تہوار پر کوئی پابندی نہیں ہوگی۔ محرم بھی مسلمان قوانین پر عمل کرتے ہوئے منائیں ۔ انہوں نے مزید کہا کہ گنیش اتسو اور دہی ہنڈی کا تہوار بغیر کسی پابندی کے منایا جائے گا۔ نئی حکومت نے گنیش منڈلوں کو رجسٹریشن فیس سے مستثنیٰ قرار دینے کا فیصلہ کیا ہے اور گنیش کی مورتیوں کی اونچائی پر کوئی پابندی نہیں رکھی ہیں ۔وزیر اعلی ایکناتھ شندے، نائب وزیر اعلی دیویندر فڑنویس اور پولیس فورس کے سینئر افسران کے درمیان محرم ، گنیش اتسو اور دہی ہانڈی کے تہوار کے سلسلے میں آج ایک اہم میٹنگ ہوئی۔ اس میٹنگ کے بعد شندے اور فڈنویس نے تہواروں کے حوالے سے کیے گئے فیصلے کے بارے میں میڈیا کو آگاہ کیا۔

انہوں نے بتایا کہ ون ونڈو اسکیم اور آن لائن سسٹم نافذ کیا گیا ہے تاکہ گنیش منڈل کے عہدیداروں کو پریشانی نہ ہو۔ ساتھ ہی پولیس سے کہا گیا ہے کہ ان منڈلوں سے رجسٹریشن فیس اور ضمانت کی کوئی رقم نہ لیں ۔انہوں نے کہا کہ وسرجن کی جگہ پر لائٹ اور مورتی بنانے کے لیے جگہوں کا انتظام بھی کیا جانا چاہیے نیز وزیر اعلیٰ نے یہ بھی کہا کہ حکومت گنیش کی مورتی کی آمد اور وسرجن کی پوری اجازت دے گی۔انہوں نے کہا کہ اس سال دہ محرم، گنیش اتسو اور دہی ہانڈی کو جوش و خروش اور حد بندیوں کو مدنظر رکھتے ہوئے منایا جانا چاہیے۔انہوں نے کہا کہ ہم سماجی بیداری اور اتحاد کے لیے تہوار مناتے ہیں لیکن تہوار مناتے ہوئے امن و امان برقرار رکھا جائے۔ اس کے لیے پولیس اور ضلعی انتظامیہ کو ہدایت دے دی گئی ہیں۔ محرم اور دیگر تہواروں کے خوش اسلوبی سے انعقاد کو یقینی بنانے، آمد ورفت کے راستے کے فوری مرمت کی ہدایات اور کسی بھی تہوار سے کسی کو کوئی تکلیف نہ ہواس کیلئے انہوں نے پولس انتظامیہ کو ضروری ہدایت دی ہیں۔

انہوں نے کہا کہ کسی بھی تہوار کو مناتے وقت اصولوں پر عمل کریںاور یہ یقینی بنائیں کہ قوانین کو نہ توڑیں، پولیس انتظامیہ کے ساتھ تعاون کریں۔ وزیر اعلیٰ نے کہا کہ حکومت کو امید ہے کہ قوانین پر عمل کرتے ہوئے تہوار منائے جائیں گے ۔ انہوں نے پولس اور ضلع انتظامیہ کو بھی ہدایت دی کہ وہ گنیش اتسو، دہی ہانڈی اور محرم کے تہواروں کے دوران ریاست میں امن و امان کو بہتر بنائے رکھنے کے لیے منصوبہ بندی کریں۔ گنپتی کےآغاز سے قبل ریاست بھر میں سڑکوں پر پڑے گڑھوں کو بھرنے کے لیے فوری کارروائی کی جائے۔ اسی کے ساتھ وزیراعلی نےگنیش منڈلوں کو رجسٹریشن فیس معاف کرنے اور اتسوکے دوران محکمہ پولیس سے لیا گیا گارنٹی فارم نہ لینے کی بھی ہدایت دی۔یہ تہوارہر سال سماجی جذبے کے ساتھ منایا جاتا ہے۔ قوانین پر عمل کرنا ضروری ہے۔ تاہم انتظامیہ کو چاہیے کہ وہ غیر معقول قواعد نافذ کیے بغیر بورڈ کے ساتھ تعاون کرے۔ریاست بھر میں تہوار کے لیے ایک ضابطہ ہوگا۔ انہوں نے یہ بھی ہدایت کی کہ ضلعی انتظامیہ فیسٹیول کے لیے کوآرڈینیشن افسران تعینات کرے۔ممبئی میں’بیسٹ‘کی طرف سے تمام وسرجن مقامات اور وسرجن راستوں پر مناسب بجلی کی فراہمی کا بندوبست کیا جانا چاہیے۔

اس سال بھی مورتی کی اونچائی پر سے پابندیاں ہٹا دی گئی ہیں۔ نیز، حکومت مجسمہ سازوں کے تمام مسائل کو حل کرنے کے لیے مثبت ہے اور وزیر اعلیٰ مسٹر شندے نے ممبئی کے مجسمہ سازوں کو مورتیوں کے لیے جگہ کا تعین کرنے کے لیے مناسب منصوبہ بندی کرنے کے ساتھ ساتھ کچھ جابرانہ شرائط و ضوابط میں نرمی کرنے کی بھی ہدایت دی۔ شندے نے مزید کہا کہ اگر گنیش منڈل کے کارکنوں کے خلاف صوتی آلودگی اور کچھ دیگر جرائم کی اطلاع ملتی ہے تو پولیس کو انہیں ہٹانے کے لیے کارروائی کرنی چاہیے۔ نیز یہ بھی ہدایت دی کہ گنیش منڈلوں کے لئے ایوارڈ اسکیم کی شروعات کے مطابق ایک مناسب پالیسی طے کی جائے۔ انہوں نے عدالت سے دہی ہانڈی کا تہوار مناتے ہوئے چھوٹے گووندا کے بارے میں عدالت کی طرف سے دی گئی ہدایات پر عمل کرنے کی بھی اپیل کی۔اس موقع پر نائب وزیر اعلیٰ دیویندر فڑنویس نے کہاکہ گنیش تہوار اہم ہے۔ انتظامیہ اس تہوار کو جوش و خروش سے منانے میں تعاون کرے۔ انہوں نے یہ بھی کہا کہ کسی بھی مسائل کو باہمی تعاون سے حل کیا جانا چاہیے۔ ڈائرکٹر جنرل آف پولیس رجنیش سیٹھ نے آنے والے تہواروں کے سلسلے میں امن و امان برقرار رکھنے کے لیے کی گئی تیاریوں کو پیش کیا۔ اس میٹنگ میں چیف سکریٹری منو کمار سریواستو، محکمہ داخلہ کے ایڈیشنل چیف سکریٹری آنند