محبت کی خاطر مذہب تبدیلی کرنے والی عشرت پروین کا عبرتناک انجام

23,494

لکھنؤ-25. ستمبر ۔ (ورق تازہ نیوز)یوپی کے مڈویا میں رہنے والی عشرت پروین نے محبت کی خاطر اپنا مذہب تبدیل کیا اور زندگی بھر اس کے ساتھ رہنے کا وعدہ کرتے ہوئے سونی تیواری بن گئی۔ لیکن اسے اندازہ نہیں تھا کہ پشپیندر تیواری، جس سے وہ بہت پیار کرتی تھی، ایک دن اس کی موت کا سبب بن جائے گا۔

پشپیندر نے 2 ساتھیوں کی مدد سے سونی کا کانٹا نکالا۔ اس کے بعد خود کو بچانے کے لیے اس نے فلمی انداز کا جال بچھایا لیکن پولیس کی چالاکیوں کی وجہ سے وہ اپنے ہی بنائے ہوئے جال میں پھنس گیا۔

پولیس نے اس معاملے میں 3 ملزمان کو گرفتار کرکے جیل بھیج دیا ہے۔ معلومات کے مطابق مسکنوا کا رہنے والا پشپیندر تیواری عرف شبھم 2019 میں جم ٹرینر کے طور پر کام کر رہا تھا۔ جہاں عشرت پروین آیا کرتی تھی۔ تربیت کے دوران دونوں ایک دوسرے کو جان گئے اور بعد میں یہ دوستی محبت میں بدل گئی۔کچھ دنوں کے بعد پشپندرا ماڈل بننے ممبئی آگیا۔ اس کے بعد عشرت بھی ممبئی پہنچ گئی۔ مذہب تبدیل کرنے کے بعد عشرت نے پشپیندر سے شادی کی۔ وہ کورونا وائرس کی وجہ سے شادی کے 6 ماہ بعد لکھنؤ واپس آئے۔

جم بند ہونے کی وجہ سے پشپیندر بے روزگار ہو گیا۔ اس کے ساتھ ہی دونوں مڈویا میں کرائے کے کمرے میں رہ رہے تھے۔ پشپیندر جو کہ روزگار کی تلاش میں تھا، نے کچھ دوستوں کی مدد سے مسکنوا گاؤں میں ایک جم کھولا۔ وہ لکھنؤ بھی آتا اور جاتا تھا۔ اس کی وجہ سے عشرت عرف سونی تیواری اور پشپیندر میں جھگڑا شروع ہوگیا۔

رشتہ داروں نے دونوں کو الگ رہنے کا مشورہ دیا۔ لیکن پشپندرا نے انکار کر دیا۔ تب پشپیندر کو شک ہوا کہ سونی کے دوسرے نوجوان کے ساتھ تعلقات ہیں۔ اس کے بعد پشپیندر نے سونی کو مارنے کا منصوبہ بنایا۔ بھائی گووند نے اس کا ساتھ دیا۔ شروع میں وہ تیار نہیں تھا لیکن پشپندرا نے اسے فلم دریشیام دکھا کر تیار کیا۔

پشپیندر اور گووند کی واٹس ایپ چیٹ پولیس کے ہاتھ لگی ہے۔ پولیس کے مطابق قتل میں ملوث 3 ملزمان سے الگ الگ پوچھ گچھ کی گئی۔ سورج ورما نے پھر اعتراف کیا کہ انہوں نے دوستی کے لیے پشپندر کا ساتھ دیا۔ سورج نے پشپیندر کی کار کی مرمت کے لیے اپنی موٹر سائیکل گروی رکھ کر 15,000 روپے اکٹھے کیے تھے۔

ملزم نے اعتراف کیا کہ یہ واقعہ 2 ستمبر کی صبح تقریباً 4 بجے عادل نگر میں کرائے کے مکان میں پیش آیا۔ شام کو سورج گووند کو اپنی اسکوٹی پر لے گیا اور اسے ایک دوست کے گھر روک لیا۔ پلان کے مطابق پشپیندر نے دروازہ کھولا اور دونوں کو کمرے میں داخل ہونے دیا۔ اس کے بعد گووند نے سونی کی ٹانگ پکڑی اور سورج نے اس کا ہاتھ پکڑا۔ سونی کو کچھ معلوم ہونے سے پہلے پشپندر نے سونی کا چہرہ تولیہ سے ڈھانپ کر مار ڈالا۔ عشرت کی نعش کو ایک بوری باندھا اور گاڑی کی پچھلی سیٹ پر رکھا گیا۔

اس کے بعد سورج اسکوٹر سے نکل گیا اور دونوں بھائی گاڑی سے باہر نکل گئے۔ لاش کو بہرائچ کے قریب گھاگھرا ندی میں پھینک کر واپس آ گیا۔ اس واقعہ نے پھر ایکبار یہ ثابت ہوگیا کہ مسلم لڑکیاں محبت کی خاطر مرتد ہورہی ہیں اور انکا انجام بھی عبرتناک ہو رہا ہے