سرینگر : پی ڈی پی صدر اور سابق وزیر اعلیٰ محبوبہ مفتی کا دعویٰ ہے کہ تحقیقاتی ایجنسیوں جیسے انفورسمنٹ ڈائریکٹوریٹ (ای ڈی) کو انہیں ڈرانے کے لئے استعمال کیا جا رہا ہے ۔انہوں نے کہا کہ حکومت ہند پی ڈی پی کو توڑنے کے لئے اس کے ممبروں کو ڈرانے کی کوشش کر رہی ہے ۔موصوفہ نے ان باتوں کا

اظہار جمعے کے روز اپنے ایک ٹویٹ میں کیا۔ٹویٹ میں ان کا کہنا تھا: ‘حکومت ہند پی ڈٰی پی کو توڑنے کے لئے اس کے ممبروں کو ورغلانے اور ڈرانے کی کوشش کر رہی ہے ۔ تحقیقاتی ایجنسیوں جیسے ای ڈی کو مجھے ڈرانے کے لئے استعمال کیا جا رہا ہے ۔ ستم

ظریفی یہ ہے کہ مجھے پاسپورٹ جیسے بنیادی حق سے بھی محروم رکھا جا رہا ہے ، یہ سیاسی انتقام گیری نہیں تو اور کیا ہے ’۔ بتادیں کہ سابق وزیر اعلیٰ محبوبہ مفتی جمعرات کو یہاں راج باغ علاقے میں واقع انفورسمنٹ ڈائریکٹوریٹ (ای ڈی) کے دفتر میں پیش ہوئیں جہاں منی لانڈرنگ کیس کے سلسلے میں ان سے قریب پانچ گھنٹوں تک پوچھ گچھ کی گئی۔پوچھ گچھ کے بعد دفتر کے باہر انہوں نے نامہ نگاروں

کو بتایا کہ پوچھ گچھ کے دوران انہیں اپنے والد کی فروخت شدہ زمین اور وزیر اعلیٰ سیکرٹ فنڈ کے بارے میں سوالات پوچھے گئے ۔ای ڈی نے محبوبہ مفتی کومنی لانڈرنگ کیس میں پوچھ گچھ کے لئے 15 مارچ کو دلی میں واقع اس کے ہیڈکوارٹرز میں پیش ہونے کو کہا تھا تاہم اس وقت ان کو ذاتی طور حاضر ہونے پر اصرار نہیں کیا گیا تھا اور بعد میں انہیں 23 مارچ کو حاضر ہونے کو کہا گیا تھا۔


اپنی رائے یہاں لکھیں