لیو اِن ریلیشن شپ: آفتاب نے اپنی معشوقہ شردھا کے 35 ٹکڑے کئے

1,794

نئی دہلی: دہلی پولیس نے ہفتہ کے روز ایک نوجوان کو گرفتار کیا ہے جس نے اپنی معشوقہ کا قتل کرکے اس کی لاش کے 35 ٹکڑے کئے اور پھر 18 دنوں کے دوران ان ٹکڑوں کو شہر کے مختلف مقامات پر پھینک دیا۔ یہ دل دہلا دینے والا واقعہ دہلی کے مہرولی میں ماہ مئی میں پیش آیا تھا۔

اس نوجوان کا نام آفتاب امین پونا والا بتایا جاتا ہے جس نے 18 مئی کو اپنی 26 سالہ معشوقہ شردھا کا گلا گھونٹ کر قتل کر دیا تھا۔ ذرائع کے مطابق قتل کے بعد آفتاب نے اس کی لاش کے 35 ٹکڑے کئے۔ انہیں اسٹور کرنے کے لئے ایک نیا فریج بھی خریدا اور 18 دن کے عرصے میں شہر کے مختلف مقامات پر ان ٹکڑوں کو پھینک دیا۔لوگوں کے شکوک و شبہات سے بچنے کے لئے وہ رات 2 بجے پولیتھین بیگ میں جسم کے اعضاء لے کر گھر سے نکلتا تھا۔

پولیس نے بتایا کہ یہ معاملہ 8 نومبر کو اس وقت سامنے آیا، جب لاپتہ شردھا کے والد نے دہلی پولیس سے رابطہ کیا کیونکہ شردھا ان کے فون کالس کا جواب نہیں دے رہی تھی۔شردھا واکر، ممبئی میں ایک ملٹی نیشنل کمپنی کے کال سینٹر میں کام کرتی تھی جہاں اس کی ملاقات 28 سالہ آفتاب پونا والا سے ہوئی۔ دونوں نے ڈیٹنگ شروع کی اور ایک ساتھ رہنے لگے۔ تاہم ان کے خاندانوں نے اس رشتے کو منظوری نہیں دی تو دونوں بھاگ کر دہلی پہنچ گئے اور لیو ان ریلیشن شپ میں رہنے لگے۔

ایک سینئر پولیس عہدیدار نے بتایا کہ آفتاب پونا والا کو ہفتے کے روز گرفتار کیا گیا اور پوچھ گچھ پر اس نے انکشاف کیا کہ دونوں میں اکثر لڑائی ہوتی تھی اور وہ اس پر شادی کے لئے زور دے رہی تھی۔مہرولی پولیس اسٹیشن میں قتل کا مقدمہ درج کرلیا گیا ہے۔ مزید تحقیقات جاری ہیں۔