• 425
    Shares

لکھیم پور کھیری:08اکتوبر(یواین آئی) لکھیم پور واقعہ کے نامزد ملزم مملکتی وزیر کے بیٹے آشیش مشر ا کے کرائم برانچ آفس جمعہ کی صبح 10بجے نہ پہنچنے کے بعد لکھیم پور کھیری پولیس نے آشیش کو دوسرا موقع دیا ہے کہ وہ سنیچر کو پولیس کے سامنے حاضر ہوں۔

پولیس نے جمعہ کو ان کی رہائش گاہ پر دوسرا سمن چسپاں کرتے ہوئے سنیچر کو 11بجے کرائم برانچ کی دفتر پہنچنے کا وقت دیا ہے۔مشرا آج کرائم برانچ آفس نہیں پہنچے جس کے بعد پولیس کو دوسری نوٹس جاری کرنی پڑی ہے۔ اس سے قبل جمعہ کو پولیس کرائم برانچ آفس پر 12بجے تک رہی لیکن آشیش نہیں پہنچے جس کے بعد دوسری نوٹس جاری کی گئی ہے۔

وہیں دوسری جانب ایسی بھی خبریں موصول ہوئی ہیں کہ وہ اتراکھنڈ کے راستے نیپال فرار ہوگیا ہے۔ذرائع نے بتایا کہ گذشتہ رات آشیش کا آخری موبائل لوکیشن اتراکھنڈ کے گوری فانٹا کا ہے۔ جو کہ نیپال سرحد سے کافی قریب ہے۔پولیس سنیچر تک آشیش کے حاضری کا انتظار کرے گی اس کے بعد ان کی طرف سے کوئی جواب نہ ملنے پر انہیں بھگوڑا قرار دے گی۔گذشتہ کل آشیش کے نام سمن جاری کر کے انہیں جمعہ کو صبح دس بجے کرائم برانچ کی آفس پر حاضر ہونے کو کہا گیا تھا۔سمن کو ان کی رہائش گاہ پر بھی چسپاں کیا گیا تھا۔سمن سی آر پی سی کی سیکشن 160 کے تحت جاری کیا گیا تھا۔ایسا گمان تھا کہ آج پوچھ گچھ کے بعد آشیش کو گرفتار کرلیا جائے گا۔

ایک سینئر پولیس افسر کے مطابق پولیس نے اس معاملے میں ابھی تک دو ملزمین لوکش رانا اور آشیش پانڈے کو گرفتار کیا ہے۔ پولیس کے مطابق گرفتار ملزمین آشیش کے قریبی ہیں اور کلیدی ملزم کی گرفتاری کے لئے مزید دبش دی جارہی ہے۔نصف درجن مشتبہ افراد کو حراست میں لیا گیا ہے جن سے پوچھ گچھ کی جارہی ہے۔مملکتی وزیرکے بیٹے آشیش مشرا کے علاوہ دیگر ایک رسوخ والا ملزم انکت داس بھی ہے۔ جس کی فوٹو ایک ویڈیو میں ہے اور جو مبینہ طور سے اس ایس یو وی میں موجود تھا جو تھار جیپ کے پیچھے چل رہی تھی۔انکت سابق بی ایس پی ایم ایل اے اکھیش داس کا بھتیجا ہے ۔

ذرائع کے مطابق انکت مملکتی وزیر اجے مشرا کا کافی قریبی ہے اور اکثر ان کے بیٹے آشیش مشرا کے ساتھ نظر آتا ہے۔سب سے اہم بات یہ ہے کہ لکھیم پور تشدد کے بعد اترپردیش کا سیاسی پارہ کافی گرم ہوگیا ہے۔کلیدی ملزم جس کا نام ایف آئی آر میں بھی ہے، آشیش مشرا مملکتی وزیراجے مشر ٹینی کا بیٹا ہے۔پولیس نے آشیش مشرا کے خلاف کئی دفعات میں بشمول قتل،مجرمانہ سازش کے مقدمہ درج کیا ہے۔تاہم وہ ابھی تک گرفتار نہیں کیا گیا ہے۔یوپی میں اپوزیشن مملکتی وزیر اجئے مشرا کی برخواستگی کا مطالبہ کررہا ہے۔وہیں مملکتی وزیر نے بدھ کو وزیر داخلہ امت شاہ سے دہلی میں ملاقات کی۔اجئے مشرا اول دن سے ہی دعوی کررہے ہیں کہ جس کار نے کسانوں کو کچلا ہے اس میں ان کا بیٹا موجود نہیں تھا ہاں وہ اس بات کو قبل کررہے ہیں کہ کار ان کی ہے۔ان کا مزید دعوی ہے کہ پتھرسے حملے کی وجہ سے ڈرائیور نے اپنا کنٹرول کھو دیا جس کے بعد کچھ مظاہرین کار کے نیچے آگئے۔ اس کے بعد ان کے ڈرائیور کا پیٹ پیٹ کر قتل کردیا گیا اور کار میں آگ لگا دی گئی۔

ورق تازہ نیوز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں  https://t.me/waraquetazaonlineاور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔