BiP Urdu News Groups

بیروت: لبنان میں گذشتہ چند گھنٹوں کے دوران عوامی حلقوں میں ایک ویڈیو کا چرچا سامنے آیا ہے۔ یہ اِفشا ہونے والی ویڈیو صدر میشیل عون اور نگراں حکومت کے سربراہ وزیر اعظم حسان دیاب کی ملاقات کی ہے۔ ملاقات میں اس حکومت کے مستقبل کے بارے میں بات چیت ہوئی جس کی تشکیل ابھی تک معلق ہے۔ وڈیو ریکارڈنگ میں ظاہر ہوا کہ صدر عوان سابق حکومت کے سربراہ سعد حریری پر حکومتی تشکیل کے حوالے سے جھوٹ بولنے کا الزام عائد کر رہے ہیں۔پیر کے روز بعبدا میں صدارتی محل میں ہوئی اس ملاقات کے دوران دیاب نے صدر سے حکومتی تشکیل میں پیش رفت کے حوالے سے سوال کیا۔ اس پر صدر نے جواب دیا کہ “کوئی تشکیل نہیں ہوئی ہے۔ اس کا کہنا ہے کہ اس نے مجھے ایک پرچہ دیا ہے وہ جھوٹ بو رہا ہے اور وہ جھوٹے بیانات دے رہا ہے … اب دیکھ لو وہ کتنے عرصے سے غائب ہے۔ یہ ہے لبنانیوں کی قسمت .. اب وہ ترکی چلا گیا ہے .. معلوم نہیں کیا چیز تبدیل ہوئی ہے”۔دوسری جانب سعد حریری کے پھوپھی زاد بھائی اور فیوچر پارٹی کے سکریٹری جنرل احمد حریری نے لبنانی صدر پر جھوٹ بولنے کا الزام عائد کیا ہے۔ اپنی ٹویٹ میں احمد نے لکھا ہے کہ “عزت مآب صدر کا ٹویٹر جھوٹ بول رہا ہے۔

اپنی رائے یہاں لکھیں