Waraqu E Taza Online
Nanded Urdu News Portal - ناندیڑ اردو نیوز پورٹل

لاک ڈاؤن میں دولہا۔دلہن کو نہیں روک پائیں ریاستوں کی سرحدیں، بارڈر پر نکاح پڑھایا گیا

IMG_20190630_195052.JPG

downloadبجنور: کورونا وائرس کے انفیکشن پر قابو پانے کے لئے ملک گیر لاک ڈاؤن کی وجہ سے ، جب دولہا اور دلہن کو ایک دوسرے کی ریاستوں میں جانے کی اجازت نہیں ملی، تو انہوں نے اپنی اپنی ریاستوں کی سرحدوں پر ہی نکاح کرکے ایک دوسرے کو قبول کیا.

اتراکھنڈ کے ٹھہری کوٹھی کالونی کے محمد فیصل کی شادی بدھ کے روز  اترپردیش کے بجنور کے نگینہ  کی عائشہ سے ہونی طے ہوئی تھی۔ عائشہ کے اہل خانہ نے بتایا کہ بارات بدھ کے روز آنی تھی لیکن لاک ڈاؤن کی وجہ سے دولہاک فریق کو اتر پردیش آنے کی اجازت نہیں مل سکی۔

انہوں نے کہا کہ دونوں فریق طے کی گئی تاریخ پر ہی نکاح ۔کرنا چاہتے تھے اس لئے انتظامیہ سے اجازت لیکر دونوں راستوں کی سرحد پر نکاح پڑھایا گیا۔ انہوں نے بتایا کہ اس دوران دونوں ریاستوں کی پولیس بھی موجود رہی۔

غور طلب ہے  ملک میں لاک ڈاؤن کے پیش نظر بہت سے جوڑوں نے  اپنی شادی کی تاریخ کو آگے بڑھایا ہے ۔ لیکن کچھ ایسے جوڑے بھی رہے جنہوں نے اس لاک ڈاؤن کا توڑ نکال کر ایک۔دوسرے کے ہوگئے ہیں۔ دراصل  ان جوڑوں نے لاک ڈاؤن کے درمیان آن لائن شادی کی۔ اس میں مہندی ، سنگیت تمام رسومات آن لائن کی گئیں۔ لوگوں کو آن لائن مدعو کیا گیا۔ شادی کرنے والے پنڈت نے آن لائن منتر پڑھے۔ لاک ڈاؤن کے قوانین کو توڑنے سے بچنے کے لئے ، آن لائن شادی کی کی گئی۔ مدھیہ پردیش سے تعلق رکھنے والے اویناش نے بتایا کہ ہم نے ستنا میں دھوم دھام سے شادی کا منصوبہ بنایا تھا ، جس میں 8000 سے زیادہ مہمانوں کی آمد متوقع تھی۔