Waraqu E Taza Online
Nanded Urdu News Portal - ناندیڑ اردو نیوز پورٹل

لاتور ضلع میں 8 مسافر مریضوں میں کورونا مثبت

IMG_20190630_195052.JPG

لاتور(محمدمسلم کبیر) ولاس راؤ دیشمکھ گورنمنٹ میڈیکل اینڈ سائنس کالج سے 3 / اپریل کی شب 20 متشبہ افراد کے سآب نمونے پونے کے لیباریٹری میں جانچ کے لئے بھیجے گئے تھے جن میں سے 12 افراد کے سآب نمونے منفی اور 8 افراد کے نمونے مثبت پائے جانے کی اطلاع ضلع انتظامیہ کی جانب سے دی گئی ہے.ان مریضوں کو آئسولیشن وارڈ میں رکھا گیا ہے.ان تمام مریضوں کی صحت مستحکم بتائی جارہی ہے.

واضح ہو کہ آندھراپردیش ریاست کے کرنول ضلع سے تعلق رکھنے والے 12 افراد ہریانہ ریاست کے حسار و فیروزپور میں منعقدہ مذہبی اجتماع کے اختتام کے 9 دن بعد وہاں کے محصول انتظامیہ سے باضابطہ اجازت نامہ حاصل کرکے اپنا واپسی کا سفر شروع کیا تھا.لیکن دستیاب اطلاع کے مطابق جب یہ لوگ اپنے سفر میں تھے اس دوران براہ عثمان آباد ہوتے ہوئے 2/ اپریل کی شب کو ان کا ڈرائیور انھیں نلنگہ ضلع لاتور میں چھوڑ کر راہ فرار اختیار کرلی تو ان لوگوں نے نلنگہ کی جام باغ مسجد میں قیام کیا.جمعہ کی صبح کو ان افراد کے آمد کی اطلاع کی چرچا پھیل گئی تو مقامی انتظامیہ کی بے چینی بڑھ گئی تو محکمہ پولس نے اس مسجد میں پہنچ کر ان افراد کو اپنے تابع میں لے کر 14 دن تک قورنطینہ میں رکھنے اور ان کی طبی جانچ کی خاطر لاتور کے ولاس راؤ دیشمکھ گورنمنٹ میڈیکل کالج میں شریک کیا. میڈیکل کالج کے عملے نے ان کے سآب نمونے لے کر پونے کی لیباریٹری کو بھیج دیا جس سے ملی رپور ٹ کے مطابق ان 12 اور دیگر 8 اس طرح جملہ 20 افرادمیں سے 8/ افراد کے نمونے کورونا مثبت پائے گئے. اب ان کو 14 یوم تک قورنطینیہ میں رکھ کر ان کی نگرانی اور علاج کیا جائیگا.

انتظامیہ اب اس معاملے میں مزید تحقیقات یر رہی ہے کہ ہریانہ سے نلنگہ پہنچنے تک ان کے کن کن لوگوں سے تعلقات رہے. نلنگہ یی جام باغ مسجد میں ان کی کن افراد سے ملاقات کی تھی.

اگرچیکہ ان تمام افراد کا تعلق تلنگانہ ریاست سے ہے مگر لاتور ضلع کی عوام میں سراسیمگی کا ماحول ہے.نلنگہ کی مسجد کو سیانٹرائز کرکے مقفل کیا گیا ہے اور اگلے چند یوم نلنگہ میں لاک ڈاؤن میں سختی کرنے یے احکامات جاری کئے ہیں.

لاتور ضلع میں ابھی تک ایک بھی مثبت کورونا مریض نہ تھا لیکن کل سے ضلع کے پڑوس میں عثمان آباد ضلع کے عمرگہ اور لوہارہ تعلقوں میں مثبت مریضوں کے پائے جانے سے لاتور ضلع میں بھی خوف کا ماحول پیدا ہوا تھا تاہم اب ضلع میں ہی مثبت مریض پائے جانے سے انتظامیہ لاک ڈاؤن پر سختی سے عمل آوری کا اقدام کرنے کی امید ہے.