• 425
    Shares

امریکی وزارت خارجہ کے ترجمان نیڈ پرائس نے اب سے کچھ دیر قبل ایک ٹی وی انٹرویو میں کہا کہ ’طالبان کا کہنا ہے کہ وہ سفارتی عمارتوں کو نشانہ نہیں بنائیں گے۔‘

امریکی ٹی وی چینل ایم ایس این بی سی کو دیے گئے انٹرویو میں ان سے سوال کیا گیا کہ کیا امریکہ اور طالبان کے درمیان معاہدے میں یہ شرط رکھی گئی تھی کہ طالبان کابل میں امریکی سفارت خانے کو نشانہ نہیں بنائے گے؟

 

پرائس کا سوال کا جواب نہ دیتے ہوئے کہنا تھا کہ ’طالبان نے خود کہا تھا کہ ان کا سفارتی عمارتوں کو نشانہ بنانے کا کوئی ارادہ نہیں ہے۔‘ان کا کہنا تھا کہ ’یقیناً یہ بین الاقوامی قوانین میں درج ہے کہ وہ ایسا نہیں کر سکتے۔ لیکن جو طالبان کہتے ہیں ہم اس پر اعتبار نہیں کر سکتے،

لیکن ہم اپنے معلومات کے تمام ذرائع سے یہ بتا سکتے ہیں کہ وہ کچھ منصوبہ بندی کر رہے ہیں۔‘ان کا مزید کہنا تھا ’اسی لیے ہم نے کچھ اہم اقدامات اٹھائے ہیں تاکہ ہم اپنے شہریوں کو بحفاظت وہاں سے نکال سکیں۔‘

ورق تازہ نیوز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں  https://t.me/waraquetazaonlineاور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔