شیعہ وقف بورڈ کے سابق چیئرمین وسیم رضوی کی پی آئی ایل کے خلاف لوگوں کے غم و غصے رکنے کا نام نہیں لے رہے ہیں ، جس میں قرآن مجید سے 26 آیات کو ہٹانے کی درخواست کی گئی ہے۔کل قومی اقلیتی کمیشن نے وسیم رضوی کو ایک نوٹس ارسال کیا ہے۔ قومی اقلیتی کمیشن نے وسیم رضوی کو 21 دن میں جواب طلب کرنے کے لئے نوٹس ارسال کیا ہے۔کمیشن نے اپنے نوٹس میں وسیم رضوی کی طرف سے قرآن مجید کے لئے پیش کی جانے والی پی آئی ایل پر بھی برہمی کا اظہار کیا ہے۔ کمیشن نے وسیم رضوی کو متنازعہ تبصروں اور مذہبی جذبات کو مجروح کرنے پر نوٹس جاری کیا ہے۔ قومی اقلیتی کمیشن نے وسیم رضوی سے غیر مشروط معافی مانگنے اور اپنا بیان واپس لینے کو کہا ہے۔ قومی اقلیتی کمیشن نے کہا ہے کہ اگر وسیم ایسا نہیں کرتا ہے تو اس کے خلاف سخت قانونی کارروائی کی جائے گی۔


اپنی رائے یہاں لکھیں