یہ شاہ رخ خان کی ‘ووٹ فار ایم آئی ایم’ ٹی شرٹ پہنے ہوئے تصویر ہے اصل تصویر 2009 کی ہے جب شاہ رخ خان اکشے کمار سے ملنے فلم بلیو کے سیٹ پر گئے تھے۔

بالی ووڈ اداکار شاہ رخ خان کو سفید ٹی شرٹ پہنے دکھایا گیا ہے جس پر لکھا ہے ‘ایم آئی ایم کو ووٹ دیں’ سوشل میڈیا صارفین کی جانب سے یہ دعویٰ بڑے پیمانے پر شیئر کیا جا رہا ہے کہ اس میں اداکار کو آل انڈیا مجلس اتحاد المسلمین (اے آئی ایم آئی ایم) کی حمایت کرتے ہوئے دکھایا گیا ہے۔

تاہم، ہمیں پتہ چلا کہ تصویر مسخ شدہ ہے۔ اصل تصویر 2009 کی ہے جب شاہ رخ خان اداکار اکشے کمار سے ملنے فلم بلیو کے سیٹ پر گئے تھے۔

دعویٰ

اس تصویر کو فرقہ وارانہ زاویہ سے شیئر کرتے ہوئے دعویٰ کیا جارہا ہے کہ اداکار کی ٹی شرٹ پر اے آئی ایم آئی ایم کا انتخابی نشان (پتنگ) ہے، اور وہ مبینہ طور پر اس سیاسی جماعت کی تائید اور حمایت کرتا ہے۔

اس ٹویٹ کا آرکائیو یہاں دیکھا جا سکتا ہے۔

(ماخذ: ٹویٹر/ اسکرین شاٹ)

زیر بحث تصویر کے ساتھ اسی طرح کے دعوے Facebook اور Twitter پر کیے گئے ہیں اور پوسٹس کے آرکائیو شدہ ورژن کو یہاں اور یہاں دیکھا جا سکتا ہے۔

یہ تصویر 2015 سے سوشل میڈیا پر گردش میں ہے اور پوسٹس کے محفوظ شدہ ورژن کو یہاں، یہاں اور یہاں دیکھا جا سکتا ہے۔

ہم نے گوگل کی ریورس امیج سرچ کی اور ایک بلاگ پوسٹ دیکھی جس میں وائرل تصویر ‘ایم آئی ایم کے لیے ووٹ’ کے بغیر تھی اور ستمبر 2009 میں شائع ہوئی تھی۔

پوسٹ کی سرخی نے تجویز کیا کہ یہ تصویر اکشے کمار کی فلم بلیو کے سیٹ کی ہے۔

اس کے بعد ہم نے متعلقہ کلیدی الفاظ استعمال کرتے ہوئے گوگل پر تلاش کیا اور پتہ چلا کہ اصل تصویر گیٹی امیجز پر دستیاب تھی۔

تصویر کے ساتھ کیپشن میں لکھا ہے: ‘اداکار شاہ رخ خان جمعہ 18 ستمبر 2009 کو ممبئی میں فلم بلیو کے سیٹ پر اکشے کمار سے ملنے پہنچے۔’

تصویر یوگین شاہ/دی انڈیا ٹوڈے گروپ کو دی گئی ہے۔

یہ تصویر 18 ستمبر 2009 کو لی گئی تھی۔

(تصویر: گیٹی امیجز/ دی کوئنٹ کے ذریعہ تبدیل شدہ)

وائرل تصویر کا اصل تصویر سے موازنہ کرنے سے پتہ چلتا ہے کہ پہلے والی تصویر میں ‘ووٹ فار ایم آئی ایم’ کا اضافہ کیا گیا ہے۔

واضح طور پر، اداکار شاہ رخ خان کی ایک مورفڈ امیج شیئر کی گئی تھی جس میں دعویٰ کیا گیا تھا کہ وہ لوگوں سے AIMIM کو ووٹ دینے کے لیے کہہ رہے ہیں۔

ورق تازہ نیوز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں  https://t.me/waraquetazaonlineاور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔