نئی دہلی، 8 جولائی (یواین آئی) سپریم کورٹ نے جمعرات کے روز دہلی اسمبلی امن و ہم آہنگی کمیٹی کی طرف سے فیس بک کے نائب صدر اجیت موہن کو بھیجے گئے سمن کو منسوخ کرنے سے انکارکردیا۔ اس کے ساتھ ہی مسٹرموہن کے دہلی اسمبلی کمیٹی کے سامنے پیش ہونے کاراستہ صاف ہوگیا۔جج سنجئے کشن کول، جج دنیش ماہیشوری اور جج رشی کیش رائے کی بنچ نے اپنے فیصلے میں کہا کہ دہلی اسمبلی کی امن و ہم آہنگی کمیٹی کے پاس یہ اختیار ہے کہ وہ فیس بک کے افسران کو کسی معاملے پر سمن بھیج سکے۔

بنچ نے کہا کہ کمیٹی کے پاس سوال پوچھنے کا اختیار ہے، تاہم وہ کوئی سزا نہیں سناسکتی ہے، ساتھ ہی اس نے کمیٹی کے ذریعہ بھیجے گئے سمن کو منسوخ کرنے سے انکارکردیا۔عدالت نے اپنے فیصلے میں کہا کہ درخواست گزار کے ذریعہ دائرکی گئی اپیل کافی بے وقت ہے، کیونکہ ابھی تک سمن جاری کرنے کے علاوہ کوئی کارروائی نہیں کی گئی ہے۔ عدالت نے کہا کہ اسمبلی کی کمیٹی کوئی تفتیش شروع نہیں کرسکتی۔

بنچ نے واضح کیا کہ اگر کمیٹی اپنے ختیارات کے برخلاف کوئی حکم جاری کرتی ہے تو فیس بک کے افسرپیش ہونے سے انکار کرسکتے ہیں۔قابل ذکر ہے کہ 2020 میں ہوئے دہلی فسادات کی تحقیقات کے سلسلے میں دہلی اسمبلی کی امن وہم آہنگی کمیٹی کی طرف سے فیس بک کے عہدیداروں کو نوٹس جاری کرکے طلب کیا گیا تھا، جس کے خلاف فیس بک نے درخواست دائر کی تھی۔ مسٹر موہن کی درخواست پر عدالت عظمیٰ نے فروری میں فیصلہ محفوظ کرلیا تھا۔