• 425
    Shares

اسلام آباد: وزیراعظم پاکستان عمران خان نے کہا ہے کہ جو بھی شخص ریپ کرتا ہے وہ مکمل طور پر اس جرم کا ذمہ دار ہے۔امریکی نیوز چینل پی بی ایس نیوز آور کو انٹرویو کے دوران ایک سوال کے جواب میں وزیراعظم پاکستان نے کہا کہ ’یہ بات بالکل واضح ہونی چاہیے کہ کسی بھی خاتون نے کیسا ہی لباس کیوں نہ پہنا ہو، جو شخص ریپ کرے گا وہی مکمل طور پر اس جرم کا ذمہ دار ہوگا، متاثرہ فرد کو اس جرم کا قطعی طور پر ذمہ دار نہیں ٹھہرایا جا سکتا۔‘عورتوں کے لباس سے متعلق اپنے ایک پرانے بیان کے بارے میں عمران خان کا کہنا تھا کہ ’میرے تبصرے کو سیاق وسباق سے ہٹ کر لیا گیا۔ میں تو پاکستانی معاشرے کے بارے میں بات کر رہا تھا جہاں جنسی جرائم میں بہت زیادہ اضافہ ہوا ہے۔‘’یہ جنسی جرائم خواتین کے ساتھ مخصوص نہیں بلکہ بچوں کے ساتھ جنسی زیادتیوں میں بہت زیادہ اضافہ ہوا ہے۔ میرے وہ الفاظ اس پس منظر میں تھے۔‘انہوں نے کہا کہ ’میں نے لفظ ’پردہ‘ استعمال کیا تھا۔ اسلام میں پردے کا مطلب محض کپڑے نہیں ہیں اور پردہ صرف عورتوں کے ساتھ خاص نہیں ہے یہ مردوں کے لیے بھی ہے، اس کا مطلب معاشرے میں فتنے کو کم کرنا ہے۔ میں اسی بارے میں بات کر رہا تھا۔‘’میں نے کبھی بھی اپنے انٹرویوز میں ایسی احمقانہ بات نہیں کی کہ جس شخص کا ریپ ہوا ہے ، وہی اس کا ذمہ دار ہے۔ جو بھی ہو اس جرم کا ذمہ دار ریپ کرنے والا ہے۔‘ٹی وی میزبان نیعمران خان سے پوچھا کہ کیا ملک میں آپ کو عورتوں کے خلاف جرائم کے حوالے سے کام کرنے میں مشکلات نہیں پیش آتیں؟اس پرعمران خان کا کہنا تھا کہ ’ایسا بالکل بھی نہیں ہے، اسلام تو عورتوں کو احترام دیتا ہے۔ حقیقت یہ ہے کہ میں نے ساری دنیا گھومنے کے بعد یہی پایا کہ اسلامی ممالک میں خواتین کو کہیں زیادہ احترام دیا جاتا ہے۔

ورق تازہ نیوز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں  https://t.me/waraquetazaonlineاور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔ 


اپنی رائے یہاں لکھیں