عمرکھیڑ کے ڈاکٹر کے قتل کے الزام میں چارافراد گرفتار‘اصل ملزم احفاظ شیخ ہنوزفرار

0 0

عمرکھیڑ:15۔جنوری۔(سلمان اشہر)11 جنوری کو عمرکھیڑ کے آر پی اتروار کوٹیر اسپتال کے میڈیکل آفیسر ڈاکٹر ہنومنت سنتارام دھرماکرے کے قتل کے معاملے میں پولس نے تین ملزمین کو گرفتار کرلیا۔ اس طرح کی اطلاع ایس پی ڈاکٹر دلیپ بھجبل نے آج پرہجوم پریس کانفرنس میں دی۔ انہوں نے کہا کہ واقعہ کی سنگینی کو دیکھتے ہوئے سپرنٹنڈنٹ آف پولیس، ایوت محل نے فوراً موقع پر پہنچ کر جائے وقوعہ کا معائنہ کیا، ملزمین کی تلاش کیلئے کل دس اسکواڈ تشکیل دیے گئے۔ ان ٹیموں کو مناسب رہنمائی دیتے ہوئے ضلع اور اس کے اطراف کی تمام حدود سیل کردی گئیں۔ مقامی کرائم برانچ اور سائبر سیل نے متوفی کی ماضی کی تاریخ، خاندانی جھگڑوں اور مالی تنازعات کی تحقیقات کا حکم دیا تھا۔


دریں اثنا، 4 مئی 2019 کو صبح 2 بجے کے قریب شیواجی چوک پر ایک موٹر سائیکل حادثہ پیش آیا تھا۔ اس حادثے میں ایک شخص شدید طور پر زخمی ہوا تھا اور اسے علاج کے لیے سرکاری اسپتال میں داخل کرایا گیا تھا۔مگر وہ موقع پر ہی دم توڑ گیاتھا۔ ڈاکٹر ہنومنت دھرماکرے اتروار کوٹیر اسپتال میں ڈیوٹی پر موجود تھے۔حادثے میں زخمی ہونے والے شیخ ارباز شیخ ابرار کی موت ڈاکٹر ہنومنت دھرماکرے کی لاپرواہی سے ہوئی، اس طرح کا الزام متوفی کے لواحقین نے اس وقت ڈاکٹروں پر الزام لگایا تھا۔

دریں اثنا، پولیس نے واقعہ کی تصدیق کی تھی اورحسب بالا مقدمہ درج کیا تھا. اس وقت مقتول کے چھوٹے بھائی احفاظ ابرار شیخ اور اس کے دیگر رشتہ داروں نے ڈاکٹروں سے جھگڑا کیا اور جان سے مارنے کی دھمکیاں دیں۔ کیس کی تکنیکی تفصیلات کے مکمل تجزیے کے بعد واقعے کی سی سی ٹی وی فوٹیج میں شناخت کیے گئے ملزمان کا چہرہ اور جسم شیخ احفاظ شیخ ابرار جیسا ہی ہے۔ا س نے اپنے ماموں ڈھانکی کے رہائشی 35 سالہ توصیف سید خلیل اور دیگر دوستوں کی مدد سے مل کر ڈاکٹر دھرماکرے کاگزشتہ دنوں گالی مارکرقتل کردیا۔

ملزمان کی شناخت 35 سالہ سید توصیف سید خلیل، 32 سالہ سید مشتاق سید خلیل، 34 سالہ شیخ محسن شیخ قیوم اور 27 سالہ شیخ شاہ رخ شیخ عالم کے نام سے ہوئی ہے۔پولس نے ملزمین کو تحویل میں لے کر پوچھ گچھ کی۔جس میں انکشاف ہوا کہ ملزم احفاظ شیخ نے ڈاکٹردھرماکرے پرنظررکھی اوراس دن اُن پرگولیاں چلائیں،۔ اس نے جرم میں استعمال ہونے والی موٹر سائیکل ڈھانکی میں اپنے چچا سید توصیف کے حوالے کر دی اور اپنے دیگر ساتھیوں کی مدد سے وہ دھنکی میںروپوش ہوگیا۔ایس پی بھجبل نے بتایا کہ اپنے بھائی کی موت کاانتقام لینے کےلئے شیخ احفاظ نے ڈاکٹر کوموت کے گھاٹ اتارا ہے ،اس معاملے میں چاروں ملزمان کو گرفتار کر لیا گیا ہے۔اصل قاتل ہنوز فرار ہے اور اس کی تلاش کے لیے دس سکواڈ مختلف مقامات پر کام کر رہے ہیں۔