نئی دہلی ۔ سابق چیف جسٹس آف انڈیا رنجن گوگوئی نے کہا کہ ملک کی عدلیہ خراب دور سے گذر رہی ہے ۔ انہوں نے یہاں تک کہدیا کہ وہ عدالتوں کو نہیں جائیں گے ۔ بڑے کارپوریٹس عدالتوں سے رجوع ہوتے ہیں ‘ نومبر 2019 میں ریٹائرمنٹ کے مارچ 2020 میں گوگوئی کو راجیہ سبھا کا رکن نامزد کیا گیا ۔ انڈیا ٹو ڈے چینل کے ایک پروگرام کے دوران انہوں نے کہا کہ عدلیہ کے نظام کو درست کرنے اور اس کے لئے ایک روڈ میاپ کی ضرورت ہے ۔ ہم پانچ ٹریلین ڈالر کی معیشت چاہتے ہیں لیکن ہماری عدلیہ نظام ٹھیک نہیں ہے ۔


اپنی رائے یہاں لکھیں