مؤلف:خان عمیر احسان .ناندیڑ

جانیے شیخ جرّاح، ملک فلسطین کی اُس آبادی کےبارے میں جو موجودہ دنوں اسرائیلی سفاکیت کا شکار ہے.

1_ *شیخ جرّاح* اس مقام کی تاریخ بارہویں صدی عیسوی میں مشہور *فاتح قدس سلطان صلاح الدین ایوبی* کے نام کے ساتھ جُڑی ہے. اس مقام کا نام ایوبی کے حکیمِ/ جرّاحِ خاص *حسّام الدین الجراحی* کے نام سے منسوب ہے. اسی مقام شیخ جرّاح میں نابلس روڈ کے قریب حسّام الدین الجراحی کی مزار ہے.

2_ قدیم شہر یروشلم کے شمال جانب ماؤنٹ سکوپس (جبل المشارف) کے ڈھلان پر ہی سے شیخ جرّاح کی آبادی نظر آنے لگتی ہے.

3_ 1860 عیسوی میں کئ مسلم امیر گھرانوں نے یہاں بڑے بڑے اور پکے گھر بنائے اور اسی کے بعد دوسرے مذاہب کے ماننے والے اس علاقے کی جانب متوجہ ہوئے.

4_ 1880 عیسوی کے بعد سے شیخ جرّاح میں امریکی اور یورپی عیسائی خاندان بسنا شروع ہوئے جو یہاں انجیل کی تعلیمات کی روشنی میں ایک مثالی سماج بنانے کا مشن رکھتے تھے. یہ عیسائی شیخ جرّاح و اطراف میں مزدوری کرنے لگے اور کچھ مسلم اور یہودی مدارس میں تدریس کرنے لگے.

5_ پہلی جنگِ عظیم میں خلافتِ عثمانیہ کی ہار کے بعد فلسطین پر سے انکا اقتدار جاتا رہا اور برطانیہ نے فلسطین بالخصوص یروشلم میں اپنی فوج استوار کرنا شروع کی. ماؤنٹ سکوپس ( جبل المشارف) کی جغرافیائی اہمیت کے پیشِ نظر یہاں(شیخ جرّاح میں) فوج کے بندوق بردار دستوں (آرٹیلیری یونٹس) کو طعینات کیا گیا.

6_ عثمانیہ حکومت کے سرکاری دستاویزات کے مطابق بیسویں صدی کے ابتدائی سالوں میں شیخ جرّاح میں 167 فلسطینی مسلم خاندان آباد تھے اور آج انکی تعداد 38 ہیں.

7_1948 میں اسرائیل کے قیام کے دوران (النقبہ فلسطینی علاقوں پر اسرائیل کے قبضے) کے دوران بے گھر کیے گئے فلسطینیوں میں سے کچھ فلسطینی خاندانوں کو اقوام متحدہ کی اجازت سے جارڈن نے شیخ جرّاح میں مکانات تعمیر کرکے دیے.

8_ 1960 میں جارڈن کی حکومت کے ساتھ شیخ جرّاح کے ان رفیوجی خاندانوں نے ایک قرارداد/معاہدہ پر دستخط کی جس کے مطابق انھیں شیخ جرّاح کے ان مکانات کےتمام مالکی حق حاصل ہوئے.

9_. لیکن یہ معاہدہ بہت ہی مختصر وقت کے لیے ثابت رہا کیونکہ 1967 میں عرب اسرائیل جنگ ہوئی اور تقریباً 6 دنوں تک چلی اس جنگ میں مشرقی یروشلم کے حصے پر اسرائیل نے اپنا قبضہ جمالیا. اسی کے ساتھ شیخ جرّاح کا علاقہ بھی اُس کے قبضے میں آ گیا.

10_. آج اسرائیل کی عدالتوں میں شیخ جرّاح میں آباد مسلم فلسطینی خاندانوں کو بے دخل کرنے کے مقدمات چل رہے ہیں جن میں سے 3 خاندانوں کو ماہ اگست کے ابتدا تک شیخ جرّاح کے اپنے مکانات خالی کرنے کے احکامات اسرائیلی عدالت دے چکی ہے.

11 _ شیخ جرّاح اور اسی طرح یروشلم و اس کے اطراف میں بسنے والے مسلم فلسطینیوں کو ان علاقوں سے بے دخل کرنے کے یہ منصوبے دراصل اسرائیل کے *ہولی بیسِن* پلان کا حصہ ہے جس کے مطابق وہ یروشلم میں انجیل میں ذکر کیے گئے باغات و عمارتوں کے طرز پر فلسطینیوں سے پاک باغات اور عمارتیں بنانا چاہتا ہے.
.