۔27.نومبر۔اناؤ سے بی جے پی ممبر پارلیمنٹ ساکشی مہاراج کے جامع مسجد توڑنے والے متنازعہ بیان کے بعد انہیں دھمکیاں ملنی شروع ہو گئی ہیں۔ ساکشی مہاراج کو دو بار کال کے ذریعے بم سے اڑانے کی دھمکی دی گئی ہے۔ فی الحال ساکشی مہاراج نے وزیرداخلہ راجناتھ سنگھ کو خط لکھ کر سکیورٹی مانگی ہے۔آپ کو بتا دیں کہ گزرے 23 اور 24 نومبر کو بھی ساکشی مہاراج کو فون پر جان سے مارنے کی دھمکی دی گئی تھی۔ فون کرنے والے نے خود کو ڈی ۔ کمپنی سے جڑا ہوا بتایا تھا۔ جس کے بعد ساکشی مہاراج کی تحریر پر صدر کوتوالی علاقے میں مقدمہ درج کیا گیا تھا







اپنی رائے یہاں لکھیں