• 425
    Shares

پنڈورا پیپرز کے انکشافات میں اردن کے شاہی محل اور عدالت کے بیانات

عمان ۔ اردن کے بادشاہ شاہ عبداللہ کا نام بھی پنڈورا پیپرز میں آف شورکمپنی بنانے والے غیر ملکی سربراہان مملکت میں شامل ہے۔ اردن کے شاہ عبد اللہ کیلیفورنیا، واشنگٹن اور لندن میں 10کروڑ ڈالر اثاثوں کے مالک ہیں۔واشنگٹن میں اردن کے سفارتخانے نے شاہ عبداللہ کے مشکوک اثاثوں سے متعلق تبصرے سے انکار کردیا۔دوسری جانب آف شور کمپنیاں رکھنے والوں سے متعلق پنڈورا پیپرز کی لسٹ میں قطر کے حکمرانوں کا نام بھی سامنے آیا ہے، سابق برطانوی وزیراعظم ٹونی بلیئر کے نام بھی آف شور کمپنی سامنے آئی ہے، یوکرین، کینیا اور ایکواڈور کے صدور کے نام بھی آف شور کمپنیاں نکلی ہیں۔خیال رہیکہ پنڈورا پیپرز ایک کروڑ 19 لاکھ فائلوں پر مشتمل ہیں اور تحقیقات میں دنیا کے 117 ملکوں کے 150 میڈیا اداروں کے 600 سے زائد رپورٹرز نے حصہ لیا ہے۔صحافتی دنیا کی سب سے بڑی تحقیقات میں پاکستان سے دی نیوز کے عمر چیمہ اور فخر درانی شریک ہوئے۔ پنڈورا پیپرز کے معاملے پر اردن کے شاہی محل اور شاہی عدالت نے بیانات جاری کردیے۔شاہی محل کی جانب سے جاری بیان میں کہا گیا ہے کہ شاہ عبداللہ امریکہ، برطانیہ میں فلیٹ اور گھروں کیمالک ہیں، یہ کوئی خفیہ یا نیا نہیں۔شاہی محل نے اپنے بیان میں یہ واضح کیا کہ سیکیورٹی، سیاسی وجوہات کے باعث غیر ملکی رہائش گاہوں کو ظاہر نہیں کیا گیا۔دوسری جانب اردن کے شاہ عبداللہ کے وکلا کا کہنا ہے کہ جائیدادیں ذاتی پیسے سے خریدی گئی ہیں۔شاہی عدالت کی جانب سے جاری بیان میں کہا گیا ہے کہ شاہ عبداللہ کی جائیداد سے متعلق نیوز رپورٹس ساکھ متاثر کرنے کی کوشش ہے۔شاہی عدالت نے اپنے بیان میں کہا کہ اردن کے شاہ کی جائیداد سے متعلق نئی نیوز رپورٹس دینے والوں کے خلاف قانونی کارروائی کا حق محفوظ رکھتے ہیں، نجی جائیدادوں کی خریداری میں ادائیگی شاہ عبداللہ اور ان کا خاندان ذاتی طور پر کرتا ہے۔خیال رہے کہ پنڈورا پیپرز میں اردن کے شاہ عبداللہ 10 کروڑ ڈالر کی جائیداد کے مالک نکلے ہیں۔

ورق تازہ نیوز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں  https://t.me/waraquetazaonlineاور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔ 


اپنی رائے یہاں لکھیں