دمشق : شامی شہر حمص میں لبنانی ملیشیا کے ایک اسلحہ گودام پر اسرائیلی بمباری کے نتیجے میں دس افراد ہلاک ہو گئے۔ مرنے والوں میں سات غیر شامی افراد بھی شامل نہیں ہیں، تاہم اسرائیلی کارروائی کی اطلاع دینے والی سیرئین ہیومن رائٹس آبزرویٹری نے ان کی مزید تفصیل نہیں بتائی۔ادھر شام کی سرکاری خبر رساں ایجنسی ’’سانا‘‘ نے اپنی ایک رپورٹ میں بتایا ہے کہ دمشق پر لبنانی فضائی حدود سے ہونے والے اس حملے کو ناکام بنانے کے لیے شامی ائر ڈیفنس سسٹم فوری طور پر حرکت میں آیا۔شامی دارلحکومت پر فضائی حملے سے متعلق شہریوں نے بھی بات کی ہے جبکہ ’’العربیہ‘‘ کی نامہ نگار نے بھی لبنانی فضائی حدود میں اسرائیلی طیاروں کی موجودگی کی تصدیق کی ہے۔سیئرین آبزرویٹری نے بتایا کہ اسرائیلی بمباری کا ہدف شام کے اندر مختلف ٹھکانے تھے۔ ایک مہینے کے توقف کے بعد یہ بمباری منگل اور چہارشنبہ کی درمیانی شب کی گئی۔ دمشق ہوائی اڈے کا علاقہ زوردار دھماکوں سے لرز اٹھا۔ وسطی شام کی گورنری حمص کے علاقے الضمیر میں شامی ایئر ڈیفنس کے علاقے میں بھی زوردار دھماکوں کی آوازیں سنی گئیں۔ذرائع کا مزید کہنا تھا کہ اسرائیلی فضائی حملے سے حمص کے علاقے میں جانی اور مالی نقصان ہوا۔ امدادی کارکنوں اور اداروں کو حملے کے مقام کی سمت جاتے دیکھا گیا ہے۔ الضمیر کے علاقے میں شامی فوج کے اسلحہ گودام میں دھماکوں کی آوازیں بھی سنائی دے رہی ہیں۔


اپنی رائے یہاں لکھیں