سپریم کورٹ نے جبری تبدیلی مذہب کی دھوکہ دہی پر قابو پانے کے لیے مرکز سے جواب طلب کیا

127

نئی دہلی: سپریم کورٹ میں دھوکہ دہی اور جبری تبدیلی پر قابو پانے کے لیے دائر درخواست کی جمعہ کو سماعت ہوئی۔ سپریم کورٹ نے وزارت داخلہ اور وزارت قانون کو نوٹس جاری کرتے ہوئے چار ہفتوں میں جواب طلب کر لیا۔

سپریم کورٹ اب اس معاملے کی اگلی سماعت 14 نومبر کو کرے گی۔ سی جے آئی للت کی بنچ کے سامنے درخواست گزار کے وکیل نے کہا کہ لوگوں کو دھمکیاں دے کر، تحائف دے کر اور پیسے کا فائدہ دے کر دھوکہ دہی سے مذہب کی تبدیلی ملک میں بڑے پیمانے پر کی جا رہی ہے۔

اس سرگرمی پر قابو پانے کے لیے تعزیرات ہند کی دفعات کو سخت کیا جانا چاہیے۔ عرضی میں سپریم کورٹ سے مرکز اور ریاستوں کو سخت قدم اٹھانے کی ہدایت دینے کا مطالبہ کیا گیا ہے۔