سوڈان میں سلسلہ قادریہ کے شیخ امین کے رقص اور ہوائی فائرنگ پر تنازع

595

گذشتہ دوروز سے سوڈان میں ویب سائٹس پرقادریہ طریق کے شیخ امین عمر امین کی ایک ویڈیو کلپ کی تشہیر کی جارہی ہے۔ان میں شیخ امین اپنے پیروکاروں کے درمیان گانے کی محفل میں خوشی میں جھوم رہے ہیں۔

ان کے اس رقص نے ملک میں تصوف کے شیوخ میں ایک تنازع پیدا کردیا ہے۔ تاہم یہ ایسا پہلا واقعہ نہیں۔ شیخ امین گذشتہ سے بار بار سوڈان میں صوفی احکامات کے حوالے سے تنازع کا باعث بنتے آر ہے ہیں۔

شیخ امین نے اس سے قبل اپنی دولت کے اظہار کے ناجائز طریقے اختیار کیے اور انھیں کڑی تنقید کا سامنا کرنا پڑا۔ ایک مرتبہ انھوں نے ایک گلوکار کے سر پر پیسے وار دئے تھے۔ دارفر کے گورنر کو خوش آمدید کہتے ہوئے انھوں نے ہوائی فائرنگ کر ڈالی تھی۔ حال ہی میں قطر میں ورلڈ کپ کے فائنل میں شرکت کے لیے انھوں نے نجی طیارہ کرائے پر لے لیا۔

سوشل میڈیا ٹرینڈ
شو مین سمجھے جانے والے شیخ امین کی ایسی سرگرمیاں اکثر سوشل میڈیا پر خاصی توجہ حاصل کرلیتی ہیں اور پھر ایک ٹرینڈ میں تبدیل ہو جاتی ہیں۔ لوگوں کی بڑی تعداد ان ٹرینڈز کا حصہ بن جاتے ہیں۔

ان کی ایسی متنازع سرگرمیوں پر سوشل میڈیا پر لوگ دو گروہوں میں بٹے دکھائی دیتے ہیں ۔ بہت سے لوگ ان کے دین سے دور رہنے والے اس طرز عمل کو تصوف کے جوہر کے خلاف گردانتے ہیں۔ان افراد کے نزدیک ظاہر ہے تصوف کا جوہر ایسی حرکتیں نہیں بلکہ دنیا لذتوں سے دور ہونا اور کفایت شعاری اختیار کرنا ہے۔

قطر ورلڈ کپ کے لیے نجی طیارہ
شیخ امین نے دوحہ میں ورلڈ کپ کے فائنل میں شرکت کے لیے اپنے پیروکاروں اور دوستوں کے لیے نجی طیارہ کرایہ پر لینے کا اعلان کر کے بھی سب کو حیران کر دیا۔ شیخ نے ورلڈ کپ میں دلچسپی کے بارے میں بعض ائمہ کے شبہات کی مذمت کی اور کہا کہ دوحہ ورلڈ کپ عربوں اور مسلمانوں کے لیے باعث فخر ہے اور یہ عرب اسلامی تہذیب کے مہذب چہرے کی عکاسی کرتا ہے۔

طیارہ 170 افراد کو لیکر دس دسمبر کو دوحہ پہنچا تھا۔ طیارے کے مسافروں میں 70 فی صد مرد اور 30 فی صد خواتین شامل تھیں۔

مخالف کی عیادت کرنا
شیخ امین کے عجیب و غریب واقعات یہیں نہیں رکتے اور گذشتہ نومبر کے آخر میں انہوں نے الارشاد اسلامک کمپلیکس میں اپنے مخالف شیخ محمد مصطفیٰ عبد القادر سے ملنے کے لیے چلے گئے اور لوگوں کو حیران کردیا تھا۔

ماہر عمرانیات ڈاکٹر اسماء جمعہ نے العربیہ ڈاٹ نیٹ کو بتایا یہ رجحان مذہب کے بارے میں بیداری کی ایک قسم کی تحریف کا اظہار کرتا ہے۔ کیونکہ یہ رجحان کسی شخص کی سماجی حیثیت حاصل کرنے کی خواہش کو ظاہر کرتا ہے۔

ایک شخص نے رتبہ حاصل کرنے کے لیے صرف مذہبی لبادہ اوڑھ رکھا یے اور اس کی روح کو لاگو کیے بغیر دوسروں کو اپنی طرف متوجہ کرنے کا ایک نیا انداز اپنایا ہے۔