سعودی ہوٹلوں کو مقامی مصوروں کے شہ پارے آویزاں کرنے کا پابند کر دیا گیا

378

سعودی عرب کی وزارت ثقافت نے مملکت کے تمام ہوٹلوں کو اس امر کا پابند کر دیا ہے کہ وہ سعودی مصوروں کے شہ پاروں کو خرید کر اپنے ہاں آویزاں کریں۔یہ فیصلہ سعودی عرب میں سیاحتی شعبے میں نئے معیار قائم کرنے کی کوششوں کے حصے کے طور پر کیا گیا ہے تاکہ غیر ملکی سیاح مملکت کے کلچر اور آرٹ سے نہ صرف آگاہ ہو سکیں بلکہ یہ ان کی سعودی کلچر میں دلچسپی کا بھی باعث بنے۔

وزارت ثقافت کے اس نئے اقدام کا مقصد مملکت میں ثقافتی پروگراموں اور سعودی ورثہ کو آگے بڑھانا بھی ہے اور محفوظ کرنا بھی۔ سعودی وزارت ثقافت نے یہ ‘ انیشیٹو ‘ وزارت سیاحت کے تعاون سے لیا ہے۔دونوں وزارتوں کے باہمی تعاون نے عرب مصوری میں مقامی ٹیلنٹ کو اجاگر کرنے اور اس کی حوصلہ افزائی کا ماحول پیدا ہو سکے گا۔

مقامی مصوروں اور فنکاروں کی تخلیقی صلاحیتوں کا اظہار اور ان کی پذیرائی ہو گی تصویری شہ پاروں کے علاوہ روایتی ثقافتی کھانوں کی بھی ترویج ہو گی اور سعودی عرب آنے والے سیاح نئے ثقافتی تجربے سے گذریں گے۔ یہ نیا ثقافتی تجربہ ان کے سیاحتی دوروں کو یاد گار بنانے میں مدد دے گا۔