ریاض : سعودی محکمہ پاسپورٹ نے کہا ہے کہ وہ افراد جن کی مملکت میں مکمل کورونا ٹیکہ اندازی نہیں ہوئی ان پر ہوٹل قرنطینہ کی شرط عائد کی گئی ہے۔ عرب میڈیا کی رپورٹ کے مطابق مملکت کے محکمہ پاسپورٹ وامیگریشن(جوازات) کے ٹوئٹر ہینڈل پر ایک شہری نے استفسار کیا کہ میں نے ایک ویکسین سعودی عرب میں لگوائی ہے جبکہ دوسری اسی برانڈ کی اپنے ملک میں کیا سعودی عرب آنے پر لازمی قرنطینہ کرنا ہوگا؟۔ جوازات نے وضاحت پیش کی کہ جن ممالک سے سفری پابندی کا خاتمہ کیا گیا ہے وہاں سے ایسے مسافر جنہوں نے مملکت میں کورونا کی ایک ویکسین لگوائی ہے ان کے لیے چار دسمبر سے براہ راست پروازیں کھولی جائیں گی۔ سعودی محکمہ پاسپورٹ نے کہا کہ ایسے افراد کو مملکت لوٹنے پر لازمی تین دن کا ہوٹل قرنطینہ کرنا ہوگا اور تیسرے روز کورونا ٹیسٹ ہوگا، رپورٹ منفی آنے کی صورت میں قرنطینہ ختم کی جائے گی۔

ورق تازہ نیوز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں  https://t.me/waraquetazaonlineاور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔ 


اپنی رائے یہاں لکھیں