تبوک ریجن کی ایک مسجد میں موذن اور نمازی کو قتل کردیا گیا۔ پولیس نے مفرور ملزم کو گرفتار کرلیا۔

اخبار 24 اور المرصد کے مطابق تبوک کے البوادی محلے میں ایک مسجد کے موذن اور ایک شخص کے درمیان جمعے کی صبح جھگڑا ہوا تھا۔

ذرائع نے بتایا کہ ’جھگڑا اس بات پر ہوا کہ فجر کی اذان کون دے گا۔ تلخ کلامی کے بعد نوبت ہاتھا پائی تک پہنچ گئی.‘

بتایا گیا ہے کہ ’مقامی شہری نے موذن اور مسجد میں موجود ایک نمازی پر تیز دھار آلے سے حملے کیے۔ دونوں جائے وقوعہ پر ہی دم توڑ گئے.‘

باخبر ذرائع کا کہنا ہے کہ ’ملزم مسجد کے موذن سے پہلے بھی لڑتا رہا تھا جس پر موذن نے کئی بار سرکاری اداروں کو شکایات درج کرائی تھی۔‘

تبوک پولیس نے مفرور ملزم کو گرفتار کرلیا جو مقامی شہری اور عمر کے ساتویں عشرے میں ہے۔